سانڈ کے اس خطرناک واقعہ سے مچی دہشت، جانئے کیسے

Jun 22, 2015 10:45 AM IST | Updated on: Jun 22, 2015 10:45 AM IST
سانڈ کے اس خطرناک واقعہ سے مچی دہشت، جانئے کیسے

مدھیہ پردیش کے اجین سے تقریباً پانچ کلومیٹر دور گرام چندیسرا میں آوارہ سانڈ کی دہشت سے ایک بزرگ کی موت کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ اتوار کی صبح اچانک سانڈ نے یہاں رہنے والے دھنشیام سولنکی نامی ساٹھ سالہ بزرگ پر حملہ کردیاجس سے موقع پر ان کی موت ہو گئی۔ آوارہ سانڈ کی اس حرکت سے گائوں کے لوگ دہشت میں ہیں۔

اجین کے قریب واقع گرام چندیسرا کے لوگ ان دنوں اس آوارہ سانڈ کی حرکت سے پریشان ہیں۔ دراصل، اس سانڈ نے گزشتہ پندرہ دنوں سے گاءوں میں دہشت مچا رکھی ہے اور وہ کبھی بھی کسی پر بھی حملہ کر دیتا ہے۔ اتوارکو یہاں سانڈ نے ایک ساٹھ سالہ شخص گھنشیام لال سولنکی پر حملہ کر دیاجس سے اس کی موت ہو گئی۔ گاوں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے لکڑی لے کر سانڈ کو بھگانے کی کوشش کی ۔ بس پھر کیا تھا، سانڈ نے ان پر حملہ بول دیا اور سر سے انہیں اٹھا کر دوبار اوپر کی طرف اچھالااور زمین پر پٹخ دیا جس سے گھنشیام لال کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔ اس واقعہ کے بعد سے گاوں میں دہشت ہے۔ لوگ سانڈ سے گھبرا رہے ہیں۔ لوگوں کی مانیں تو اس سے پہلے بھی سانڈ دو لوگوں پر حملہ کر چکا ہے۔ لوگوں کا الزام ہے کہ نگر نگم کے قریب پندرہ دن پہلے اس سانڈ کو یہاں چھوڑ دیا گیا ہے جو لوگوں کی جان کا دشمن بنا ہوا ہے۔

Loading...

بہر حال، سانڈ کے اس حملہ سے ہوئی موت کے بعد یہاں کے لوگ دہشت میں ہیں۔  چندیسرا کے باشندے انتظامیہ سے اس کی شکایت کر چکے ہیں لیکن اب تک اس سلسلہ میں کوئی کارروائی نہیں ہوئی ہے۔

Loading...