اترپردیش : اس گاوں کے نوجوان ہیں کنوارے ، پانچ سالوں سے نہیں بجی شنہائی ، وجہ جان کر رہ جائیں گے حیران

ملک میں بھلے ہی صفائی مہم چلائی جارہی ہو ، مگر اترپردیش کے کانپور ضلع کے آس پاس کے کئی گاووں کے لوگ کچرے کی وجہ سے کافی پریشان ہیں ۔

Nov 04, 2019 05:16 PM IST | Updated on: Nov 04, 2019 05:16 PM IST
اترپردیش : اس گاوں کے نوجوان ہیں کنوارے ، پانچ سالوں سے نہیں بجی شنہائی ، وجہ جان کر رہ جائیں گے حیران

اس گاوں کے نوجوان ہیں کنوارے ، 5 سالوں سے نہیں بجی شنہائی ، وجہ جان کر رہ جائیں گے حیران

ملک میں بھلے ہی صفائی مہم چلائی جارہی ہو ، مگر اترپردیش کے کانپور ضلع کے آس پاس کے کئی گاووں کے لوگ کچرے کی وجہ سے کافی پریشان ہیں ۔ ایک طرف جہاں کچرے سے بیماریاں پھیل رہی ہیں تو وہیں دوسری جانب "کنوارا روگ" بھی بڑھتا جارہا ہے۔ ان گاووں میں کنوارے لڑکوں کی تعداد کسی متعدی مرض کی طرح بڑھ رہی ہے ۔ کانپور کے پنکی پڑاو ، جموئی اور بدوآ پور سرائے متا گاوں میں گندگی کا انبار اتنا ہے کہ لوگ اپنی بیٹیوں کی شادی ان گاوں کے لڑکوں کے ساتھ نہیں کرنا چاہتے ہیں ۔ کانپور نگر نگم کا سالڈ ویسٹیج ان گاووں کے نزدیک میں ہے ، جس کی وجہ سے گاوں میں گندگی ، بدبو اور بیماریاں پھیل رہی ہیں ۔

بدوآپور کے سنتوش راجپوت کے مطابق یہاں تالابوں کو بھر کر کوڑا پلانٹ بنادیا گیا ہے ۔ یہاں پر کئی ٹن کوڑا پھینکا جاتا ہے ۔ یہاں گرمیوں میں کوئی نہیں ٹھہرتا ، کیونکہ یہاں پر اپنے آپ آگ لگ جاتی ہے ۔ یہاں کے 70 فیصد لوگ ٹی بی اور دما کے مرض میں مبتلا ہیں ۔ بیماری کی وجہ سے تقریبا پانچ سالوں سے یہاں کوئی بھی شادی نہیں پائی ہے ، جس کے سبب یہاں کے نوجوان نقل مکانی کرنے لگے ہیں ۔ اگر شادی ہوتی بھی ہے ، تو ٹوٹ جاتی ہے ۔ اس کے آس پاس کے گاوں بنپوروا ، کلک پوروا ، سندر نگر ، اسپات نگر یہ سب تین کلو میٹر کے دائرے میں ہیں ۔ ان گاوں کے لوگ بھی آلودگی اور گندگی میں رہنے پر مجبور ہیں ۔

Loading...

اسی گاوں کی ایک رہائشی سوم وتی کا کہنا ہے کہ دما اور بدبو والی بیماریاں کافی زیادہ پھیلی ہوئی ہیں ۔ میرے بھتیجے کی شادی طے ہوگئی تھی ، لیکن یہاں کی حالت دیکھ کر شادی ٹوٹ گئی ۔ ہمارے گاوں میں کئی سالوں سے شہنائی نہیں بجی ہے ۔ رشتے والے تو گاوں میں لڑکے دیکھنے کیلئے کافی آتے ہیں ، لیکن جب کوڑا پلانٹ ، ہوا اور بیماری کا انہیں علم ہوتا ہے ، الٹے پاوں واپس چلے جاتے ہیں ۔ پنکی پڑاو کے روی راجپوت نے بتایا کہ کانپور نگر نگم کا سالڈ ویسٹیج کوڑا پلانٹ یہاں آنے کے بعد سے ایک نہیں سو بیماریاں پھیل گئی ہیں ، جس کی وجہ سے آدھے لوگ تو اپنے بچوں کو اسکول بھی نہیں بھیجتے ہیں ۔

انہوں نے بتایا کہ پورے شہر کی گندگی ہمارے یہاں پھینکی جاتی ہے ۔ کوڑا پلانٹ ہمارے گاوں سے متصل ہے ، بدبو کی وجہ سے ہمارا جینا محال ہوگیا ہے اور ہم آلودہ ہوا میں سانس لینے کیلئے مجبور ہیں ۔ اسی گاوں کی کیتکی کا کہنا ہے کہ ہمارے گاوں میں نہ تو لڑکے اور نہ ہی لڑکیوں کی شادی ہو پارہی ہے ۔ ہمارے گاوں میں ابھی 60 لڑکے ایسے ہیں جن کی شادی کی عمر ہوچکی ہے ، لیکن ان کی شادی نہیں ہوپارہی ہے ۔ جب سے کوڑا پلانٹ یہاں آیا ہے ، کوئی بھی شادی نہیں ہوئی ہے ۔

Loading...