ہوم » نیوز » صحت

ڈیلیوری روم میں شوہر کے ساتھ رہنے سے خواتین کو کم ہوتا ہے درد زہ: تحقیق

سال 2017 میں یونیورسٹی آف کولوریڈو کی تحقیق میں پایا گیا تھا کہ شوہر یا لائف پارٹنر کے ذریعے ہاتھ پکڑنے سے بھی ڈلیوری کے وقت حاملہ خواتین کا دردزہ کم ہوجاتا ہے۔

  • Share this:
ڈیلیوری روم میں شوہر کے ساتھ رہنے سے خواتین کو کم ہوتا ہے درد زہ: تحقیق
ڈیلیوری روم میں شوہر کے ساتھ رہنے سے خواتین کو کم ہوتا ہے درد زہ: تحقیق

اکثر  جب  خواتین  حاملہ  ہوتی  ہیں  اور ڈیلیوری کیلئے اسے اسپتال کے آپرئشن تھیئٹر میں لے جایا جاتا ہے تب اس کا شوہر یا کنبہ کا کوئی شخص اس کے ساتھ جانے کی ضد کرتا ہے۔ کئی معاملے میں ڈاکٹرشوہر کو اندر آنے کی اجازت دے دیتے ہیں تو کئی معاملوں میں ڈاکٹر انہیں باہر ہی رہنے کو بول دیتے ہیں۔  جبکہ زیادہ تر معاملے میں شوہر کے ڈلیوری روم میں ساتھ آنے کو لیکر سوالیہ نشان لگا دیا جاتا ہے لیکن حال ہی میں کچھ ماہرین ایک سروے کے ذریعے سے اس نتیجے پر پہنچے کہ اگر شوپراپنی حاملہ بیوی کے ساتھ ڈیلیوری روم کے اندر آتا ہے تو خاتون کا درد زہ کم ہو جاتا ہے۔

کل 48 جوڑوں کے اوپر ہوئے اس سروے میں دیکھا گیا کہ حاملہ خواتین اپنے شوہر کے سامنے (لیبر پین) یعنی درد زہ کو زیادہ دیر تک جھیل پا رہی تھیں۔ یعنی صرف ساتھی کی موجودگی سے ان کے درد سہنے کی قوت میں اضافہ ہوگیا۔ ساتھی کے ذریعے بار۔بار بات کرنے اور چھونے سے درد کا کم ہونا قدرتی ہے لیکن ہمارے ریسرچ میں ہم نے پایا کہ صرف ان کی موجودگی حاملہ خاتون کی طاقت کو بڑھا دیتی ہے۔ ان کا درد کم ہوجاتا ہے۔


سال 2017 میں یونیورسٹی آف کولوریڈو کی تحقیق میں پایا گیا تھا کہ شوہر یا لائف پارٹنر کے ذریعے ہاتھ پکڑنے سے بھی ڈیلیوری کے وقت حاملہ خواتین کا دردزہ کم ہوجاتا ہے۔

First published: Aug 28, 2019 10:51 AM IST