உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    خواتین کے ساتھ کیا ہوتا ہے جب پیریڈس بند ہو جاتے ہیں؟

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    ایک عمر کے بعد پیریڈس بند ہونے کی حالت کو مینوپاز کہتے ہیں۔ تقریباََ 40 سے 45 سال کی عمر کے بعد مسلسل 1 سال تک حیض بند ہونے کی حالت کو مکمل مینوپاز کہا جاتا ہے

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:

      ایک عمر کے بعد پیریڈس بند ہونے کی حالت کو مینوپاز کہتے ہیں۔ تقریباََ 40 سے 45 سال کی عمر کے بعد مسلسل 1 سال تک حیض بند ہونے کی حالت کو مکمل مینوپاز کہا جاتا ہے ۔ مینوپاز کے دور سے ہر عورت گزرتی ہے۔

      مینوپاز کےبعد عورت فطری طور پر حاملہ نہیں ہو سکتی۔ کیوں کہ اس میں اوری سے پیدا کرنے کی طاقت ختم اور ہارمونس کم ہو جاتے ہیں۔ اس دوران اوری میں ایسٹروجن نام کا ہارمون بند ہو جاتا ہے۔ جس کی وجہ سے عورتوں میں جسمانی اور ذہنی تبدیلیاں آتی ہیں۔

      خواتین میں دو اوری ہوتی ہیں، جو انڈے ہارمون ایسٹروجن اور پروجسٹیرون کی پیداوار کرتے ہیں۔ یہ پروڈکٹیو نظام کا حصہ ہیں۔


      مینوپاز کے بعد جسمانی پریشانیاں

      پیریڈس بند ہونے سے خون میں عدم توازن کی وجہ سے جسم کے اندر ہیٹ میں اضافہ ہو جاتا ہے

      اس دوران عورتوں کو بہت گرمی لگتی ہے

      دل کی دھڑکن بھی بڑھ جاتی ہے

      بہت پسینہ آتا ہے

      پسینہ آنے کو سائنس کی زبان میں ’مینوپاز ہاٹ فلیشز کہتے ہیں۔ ہاٹ فلیشز میں تھوڑے تھوڑے وقفہ بعد تیز گرمی لگتی ہے اور فوراََ بعد تیز ٹھنڈ۔

      گرمی لگنے پر دل کی دھڑکن بھی بڑھتی ہے۔ چہرہ، سینہ اور گردن کا حصہ لال ہو جاتا ہے۔ یہ حالت 30 سکینڈ سے 5منٹ تک بھی ہوتی ہے۔

      اس دوران جینیٹل میں تبدیلیاں بھی ہوتی ہیں، جس میں سیکس نہ کرنے کی خواہش بھی شامل ہے

      یورینری ٹریکٹ چینج کی وجہ سے کبھی بہت زیادہ پیشاب آتا ہے اور کبھی کم۔

      ہارمونس میں تبدیلی آنے سے ہڈیاں کمزور ہو جاتی ہیں۔ اس میں جوڑوں، کمراور ہڈیوں میں درد ہوتا ہے۔

      جلد میں بھی سوکھا پن آجاتا ہے جس وجہ سے چھاتی بھی سکڑتی ہے۔

      سر درد، چکر آنا۔

      ہاضمہ کا نظام بھی ہو جاتا ہے کمزور


      First published: