ہوم » نیوز » صحت

تحقیق: اس عمر میں ماں بننا صحت کے لئے ہو سکتا ہے خطرناک! جانیں یہاں

تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ 20 سے 24 سال کی عمر میں، 24 سے 35 سال کی اور 15 سے 19 سال کی عمر میں بچے پیدا کرنے والی خواتین کی صحت پر عمر کا کیا اثر پڑتا ہے، کیا انہیں آگے چل کر اس دوران کسی طرح کی بیماری یا مشکل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ آیئے جانتے ہیں ریسرچ میں ہوئے انکشاف کے بارے میں۔۔۔

  • Share this:
تحقیق: اس عمر میں ماں بننا صحت کے لئے ہو سکتا ہے خطرناک! جانیں یہاں
علامتی تصویر۔(نیوز18 ہندی)۔

ماناجاتا ہے کہ حمل کی سب سے صحیح عمر25 سے 35 سال تک ہوتی ہے۔ اس کے بعد خواتین کی بچہ پیدا کرنے کی صلاحیت کم ہوجاتی ہے۔ ساتھ ہی کئی مشکلات بھی سامنے آنے لگتی ہیں۔ حال ہی میں اوہیو اسٹیٹ یونیورسٹی کے ذریعے کی گئی ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ 20 سے 24 سال کی عمر میں، 24 سے 35 سال کی اور 15 سے 19 سال کی عمر میں بچے پیدا کرنے والی خواتین کی صحت پرعمر کا کیا اثر پڑتا ہے، کیا انہیں آگے چل کر اس دوران کسی طرح کی بیماری یا مشکل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ آیئے جانتے ہیں ریسرچ میں ہوئے انکشاف کے بارے میں۔۔۔

ریسرچ کے مطابق جن خواتین کا پہلا بچہ 25 سے 35 سال کی عمر کے درمیان ہوتا ہے۔ ان کی صحت 40 کی عمر میں پہنچ کر باقی  خواتین کے موازنہ میں بہتررہتی ہے۔

وہیں 20 سے 24 سال کی عمر میں ماں بننے والی خواتین کے صحت میں زیادہ فرق نظر ںہیں آیا۔

بات اگر 15۔19 سال کی عمر میں ماں بننے والی خواتین کی کریں تو ان کی صحت خراب ہوسکتی ہے۔ اسٹڈی کےمطابق جو خواتین پہلے ماں بنیں اور بعد میں انہوں نے شادی کی ان کی صحت درمیانی زندگی میں تنہا یعنی سنگل  رہنے والی ماؤں کے موازنے میں خراب ہوتی ہے۔

یعنی کم عمر میں ماں بننا آگے چل کر صحت کیلئے خطرناک ہوسکتا ہے۔

ڈسکلیمر: اس تحریر میں دی گئیں جانکاریاں اور اطلاعات عام معلومات پر مبنی ہیں۔ نیوز18 اردو ان کی تصدیق نہیں کرتا ہے۔ ان پر عمل کرنے سے پہلے متعلقہ ماہرین سے رابطہ کریں۔۔۔
First published: Aug 15, 2019 02:34 PM IST