ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مشرقی لداخ میں ایل اے سی کے قریب گہرے علاقوں سے چین نے 10ہزارفوجیوں کوبلایاواپس

India-China Stand-Off: حکومتی ذرائع نے اے این آئی کو بتایا کہ چینی فوج نے مشرقی لداخ سیکٹر اور قریبی علاقوں کے برعکس اپنے روایتی تربیتی علاقوں سے تقریبا ً 10 ہزارفوجیوں کو واپس بلایا ہے۔

  • Share this:
مشرقی لداخ میں ایل اے سی کے قریب گہرے علاقوں   سے چین نے 10ہزارفوجیوں کوبلایاواپس
مشرقی لداخ میں ایل اے سی کے قریب گہرے علاقوں سے چین نے 10 ہزار فوجیوں کوبلایاواپس

ہندوستان اور چین کے مابین8 ماہ سے جاری تنازعہ کے درمیان ، چینی فوج نے مشرقی لداخ میں لائن آف ایکچول کنٹرول کے قریب گہرے علاقوں سے لگ بھگ 10ہزار فوجیوں کو واپس بلایاہے۔تاہم ، سرحدی علاقوں میں تعیناتی پہلے کی طرح ہی ہے اور اس سکیٹر میں متعدد مقامات پر دونوں اطراف کے فوجی آمنے سامنے ہیں۔سرکاری ذرائع نے اے این آئی کو بتایا کہ چینی فوج نے مشرقی لداخ سیکٹر اور قریبی علاقوں کے برعکس اپنے روایتی تربیتی علاقوں سےتقریبا ً 10  ہزارفوجیوں کو  واپس  بلایا ہے۔۔ چینی روایتی تربیت کا علاقہ تقریباً 150  کلومیٹر اور ایل اے سی کے ہندوستان کی سمت سے دور ہے۔ چین نے گذشتہ سال اپریل سے مئی  کے درمیان  ان فوجیوں کو تعینات کیا تھا۔


ذرائع نے بتایا کہ چینی فوج کی جانب سے ہندوستانی سرحد کے قریب بھاری مقدار میں ہتھیاروں کو رکھاگیاہے۔ ذرائع نے بتایا کہ گہرائی والے علاقوں سے فوجیوں کے انخلا کی وجہ انتہائی سردی ہو سکتی ہے اور ان کے لئے اس سرد علاقے میں بڑی تعداد میں فوجیوں کی تعیناتی کرنا مشکل ہوسکتا ہے۔



چینی فوج نے 50ہزار جوانوں کو کیا تھا تعینات

ذرائع نے بتایا کہ یہ کہنا مشکل ہے کہ اگر رواں سال فروری سے مارچ کے درمیان درجہ حرارت میں اضافہ ہوتا ہے تو چینی حکومت فوجیوں کو واپس ہندوستانی سرحد پر تعینات کریگی؟۔ اپریل - مئی 2020 میں ، چینی فوج نے مشرقی لداخ سیکٹر میں جارحانہ انداز میں ہندوستانی سرحد کے ساتھ قریب50 ہزار فوجی جوانوں کو تعینات کیاتھا۔علامتی تصویر

چینی حکومت کی اس کارروائی پر ہندوستانی فوج نے فوراً شدید ردعمل کا اظہارکیاتھا۔ چین نے ہندوستان کے مخالف علاقے میں سالانہ تربیتی مشق کی آڑ میں ہندوستانی علاقوں میں منتقل ہونا شروع کیا ۔جس کے بعد دونوں افواج کے مابین کئی تنازعات منظر عام پر آئے۔ہندوستانی فوج نے چینی فوج کی سرگرمیوں پر کڑی نگاہ رکھی ہے اور انہیں ریحانگ لا اور ریچین لا کے ساتھ ساتھ جنوبی پین پینگ جھیل کے علاقے میں اسٹریٹجک پوزیشنوں پر گرفت کو برقرار رکھا ہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Jan 11, 2021 11:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading