ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ایل اے سی کے پار نظر آئے چینی ہیلی کاپٹر، زخمی فوجیوں کو کیا جا رہا ائیرلفٹ

بتایا جا رہا ہے کہ ان ہیلی کاپٹر کو مارے گئے اور زخمی فوجیوں کو لے جانے کے لئے لایا جا رہا ہے۔

  • Share this:
ایل اے سی کے پار نظر آئے چینی ہیلی کاپٹر، زخمی فوجیوں کو کیا جا رہا ائیرلفٹ
ایل اے سی کے پار نظر آئے چینی ہیلی کاپٹر، زخمی فوجیوں کو کیا جا رہا ائیرلفٹ

نئی دہلی۔ مشرقی لداخ (Ladakh) کی گلوان وادی (Galwan Valley) میں چین کے ساتھ ہوئے پرتشدد جھڑپ میں ہندوستان کے کم سے کم 20 جوان شہید ہو گئے ہیں۔ اس واقعہ میں چین کو بھی بھاری نقصان ہوا ہے اور چین کے 43 فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔ اس بیچ آج صبح سے ہی ایل اے سی کے دوسری طرف چینی ہیلی کاپٹر دیکھے جا رہے ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ ان ہیلی کاپٹر کو مارے گئے اور زخمی فوجیوں کو لے جانے کے لئے لایا جا رہا ہے۔


اطلاعات کے مطابق، پیر کی رات کو دونوں ملکوں کی افواج کے درمیان پرتشدد جھڑپ ہوئی تھی۔ پیر کی رات کو گلوان وادی کے پاس دونوں ملکوں کے بیچ چل رہی بات چیت کے بعد سے سب کچھ معمول نظر آ رہا تھا، تبھی چینی فوجیوں نے دھوکے سے ہندوستانی جوانوں پر حملہ کر دیا۔ اس پورے واقعہ کی جانکاری دیتے ہوئے ہندوستانی فوج نے کہا کہ 15 جون کی رات کو گلوان وادی علاقے میں پرتشدد جھڑپ ہوئی تھی جس میں ہندوستان کے 20 جوان شہید ہو گئے تھے۔



اس واقعہ کے بعد سے دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی ہے۔ ہندوستان کی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ ہندوستان نے ہمیشہ ہی ایل اے سی کا احترام کیا اور چین کو بھی ایسا ہی کرنا چاہئے۔ وزارت نے کہا کہ ایل اے سی پر پیر کی رات جو کچھ بھی ہوا، اس سے بچا جا سکتا تھا۔ دونوں ملکوں کی افواج کے درمیان اس جھڑپ میں دونوں ملکوں کو نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

ایل اے سی پر چینی فوجیوں کے ساتھ ہوئے پرتشدد جھڑپ کے بعد دونوں ملکوں کے بیچ جس طرح کے حالات بن رہے ہیں، اس کے بعد سے دہلی میں میٹنگوں کا دور بھی شروع ہو گیا ہے۔ وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کی چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت اور فوجی سربراہ جنرل ایم ایم نروانے کے ساتھ میٹنگ ہوئی۔ وزیر دفاع نے اس معاملہ کی جانکاری وزیر اعظم کو دی ہے۔
First published: Jun 17, 2020 08:13 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading