ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

چین کے خلاف ہندوستان مزید سخت موقف اختیار کرے: عالمی امور کے ماہر مقبول احمد سراج کا بیان

مقبول احمد سراج نے کہا کہ حال ہی میں سرحد پر پیش آئے واقعات کے بعد ہندوستان کی تشویش بجا ہے اور انڈین آرمی چین کی دراندازی کی کوششوں کا جواب دینے کی پوری طاقت رکھتی ہے۔

  • Share this:
چین کے خلاف ہندوستان مزید سخت موقف اختیار کرے: عالمی امور کے ماہر مقبول احمد سراج کا بیان
عالمی امور کے ماہر مقبول احمد سراج

بنگلورو: سینئر صحافی، عالمی امور کے ماہر مقبول احمد سراج نے چین کی جارحانہ کارروائی کی سخت مذمت کی ہے۔ نیوز 18 اردو سے خاص بات چیت کے دوران مقبول احمد سراج نے کہا کہ ہندوستان نے وادی گلوان میں چین کو مناسب جواب دیا ہے۔  چین کے خلاف ہندوستان کو مزید سخت موقف اختیار کرنے کی ضرورت ہے۔ مقبول احمد سراج نے کہا کہ چین اپنے توسیع پسندانہ عزائم کے ساتھ پرانے تنازعات کو ہوا دینے کی کوشش کرتا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حال ہی میں سرحد پر پیش آئے واقعات کے بعد ہندوستان کی تشویش بجا ہے اور انڈین آرمی چین کی دراندازی کی کوششوں کا جواب دینے کی پوری طاقت رکھتی ہے۔


مقبول احمد سراج کہتے ہیں کہ ہندوستان اور چین کے درمیان سرحدی تنازعات کئی بار منظر عام پر آئے ہیں اور دنوں ممالک نے مذاکرات کے ذریعہ تنازعات پر قابو پایا ہے۔ لیکن اس مرتبہ لداخ کے وادی گلوان میں حالات کا بے قابو ہونا اور دنوں جانب جانی نقصان ایک بڑی تشویش کا سبب ہے۔ چین کی جارہانہ کارروائی کا ہندوستان نے پوری ہمت کے ساتھ جواب دیا ہے۔ مقبول احمد سراج نے کہا کہ چین کے تنازعات کی ایک طویل تاریخ رہی ہے۔ چین نے ہندوستان کے خطہ تبت کو پوری طرح ہضم کرلیا ہے۔  سکم میں سرحدوں میں چین ردوبدل کرتا رہا ہے۔ اروناچل پردیش پر چین اپنا دعوی ٹھوکتا رہا ہے۔ 1962 میں ہندوستان اور چین کے درمیان جنگ ہوئی ہے ۔اس وقت چین کی فوجیں اروناچل پردیش میں داخل ہوئی تھیں۔ تبت کے مذہبی رہنما دلائی لامہ کو ہندوستان میں پناہ دینے کی چین مخالفت کرتارہا ہے ، بدھ مت کے ایک گروہ کا اروناچل پردیش میں قیام کی بھی چین مخالفت کرتاہے۔ چین اس طرح کے کئی مسائل کو مدعا بناتا رہا ہے۔


مشرقی لداخ کے گلوادی وادی میں کم از کم 20 جوان شہید، چین کے 43 فوجی ہلاک


مقبول احمد سراج نے کہا کہ موجودہ تنازعہ مشرقی لداخ سے جڑا ہوا ہے۔  وادی گلوان کی ایک جھیل پر چین نے قبضہ جمانے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پینگوان نامی یہ جھیل دنیا کے سب سے اونچے مقام پر واقع ہے۔ نمکین پانی کی جھیل کے طور پر بھی مشہور ہے۔ چین وادی گلوان میں جدید ہتھیاروں کے ذریعہ اس جھیل کے کچھ حصے پر قابض ہونے کی کوشش کی ہے۔ اس پس منظر میں ہندوستان کی تشویش بجا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین کے خلاف عالمی دباؤ قائم کرتے ہوئے ہندوستان سخت موقف اختیار کرے۔تاہم مقبول احمد سراج کہتے ہیں ہند اور چین کے درمیان تجارتی اور ثقافتی تعلقات متاثر نہ ہوں اس بات پر بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے  چین اور ہندوستان کے درمیان  ثالثی کی امریکہ کی حالیہ پیشکش کو غیر ضروری قرار دیا۔ مقبول احمد سراج نے کہا ہندوستان اس قوی پوزیشن میں ہے کہ وہ اس تنازع کو اپنے طور پر حل کرسکتا ہے۔ ہندوستان کے وزیر خارجہ جئے شنکر ہند۔ چین تعلقات کے ماہر رہے ہیں اور بھی کئی ماہرین موجود ہیں۔ ہندوستان ساوتھ ایشیاء کی ایک بڑی طاقت ہے۔ لہذا بغیر کسی ملک کی مداخلت کے ہندوستان چین کے موجودہ تنازعہ کو حل کرنے کی طاقت رکھتا ہے۔
First published: Jun 17, 2020 10:24 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading