ہوم » نیوز » وطن نامہ

پینگونگ سے کیسے پیچھے ہٹ رہا ہے چین، کیا۔کیا کیے جا رہے ہیں تباہ: یہان جانیں سب

چینی فوج پینگانگ کے شمالی اور جنوبی کنارے سے اپنے دیگر سازو سامان کے ساتھ پیچھے ہٹ رہا ہے۔ چین اس علاقے میں بنکر، شیور اور دیگر سہولیات کو تباہ کر رہا ہے۔

  • Share this:
پینگونگ سے کیسے پیچھے ہٹ رہا ہے چین، کیا۔کیا کیے جا رہے ہیں تباہ: یہان جانیں سب
چینی فوج پینگانگ کے شمالی اور جنوبی کنارے سے اپنے دیگر سازو سامان کے ساتھ پیچھے ہٹ رہا ہے۔ چین اس علاقے میں بنکر، شیور اور دیگر سہولیات کو تباہ کر رہا ہے۔

چینی فوج پینگانگ کے شمالی اور جنوبی کنارے سے اپنے دیگر سازو سامان کے ساتھ پیچھے ہٹ رہا ہے۔ چین اس علاقے میں بنکر، شیور اور دیگر سہولیات کو تباہ کر رہا ہے۔ ہندستانی فوج نے 16 فروری کو کچھ ویڈیو اور تصویریں جاری کرکے بتایا تھا کہ چین کے پیپلز لبریشن آرمی (پی ایل اے) کے ذریعے کچھ اسٹرکچر کو چپٹا کرنے کیلئے بلڈوزر کا استعمال کرتے ہوئے دکھایا ہے۔ ساتھ ہی اس میں چین کے فوجیوں کو سامان، گاریوں کے ساتھ پیچھے ہٹنے کی تیاری کرتے دکھایا گیا ہے۔


لیفٹیننٹ جنرل وائی کے جوشی (Lieutenant General Yogesh Kumar Joshi) نے بتایا کہ دس فروری کو پینگانگ تسو میں ڈس انگیجمینٹ (disengagement) کا عمل چل رہا ہے۔ دونوں فوجیں اسے چار اسٹیپ کریں گی۔ جنرل جوشی نے کہا کہ ہر دن اس عمل کو سلیقے سے شروع کیا جاتا ہے جہاں ہم سب سے پہلے صبح میں ایک فلیگ میٹنگ کرتے ہیں جہاں اس بارے میں فیصلہ کیا جاتا ہے کہ اس خاص دن میں ڈس انگیجمینٹ کے عمل کو کیسے انجام دیا جائے گا ۔


انہوں نے بتایا کہ اب تک دونوں فریق بختر بند گاڑیاں، ٹینک ڈس انگیج کر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا تیسرے چوتھے مرحلے میں کیلاش رینج ریزانگ میں پیدل فوج کے جوان ہٹیں گے۔ جوشی نے آگے کہا کہ دونوں ممالک کے فوجی افسران ایک دوسرے سے بات کر رہے ہیں۔ اگر کوئی شک ہوتا ہے تو اس پر بات کرتے رہیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ امید تو نہیں تھی لیکن جو ہندستانی فوج نے اگست میں کیا اس کی وجہ سے یہ ٹرننگ پوائنٹ تھا۔ اس کے بیچ چینی فوج لیول پر آئی اور پھر (disengagement) کی شروعات ہوئی۔


سی این این نیوز 18 سے ایکسکلوزو بات چیت میں ناردن کمانڈ کے چیف لیفٹیننٹ جنرل وائی کے جوشی نے کہا کہ دس فروی سے دونوں کی فوج کی واپسی کا عمل تیزی سے جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چار اسٹیپ میں دونوں کی فوجیں پیچھے ہٹیں گی۔ چیف لیفٹیننٹ جنرل وائی کے جوشی نے کہا، چار اسٹیپ میں ڈس انگیجمینٹ کا عمل پورا ہوگا۔ پہلے دو مرحلوں میں بند بختربند گاڑیاں اور ٹینک پیچھے ہٹائے جا چکے ہیں۔ دونوں جانب سے ایسا کیا ہے۔ تیسرے مرحلے میں پیدل فوج پیچھے ہٹے گی اور چوتھے مرحلے میں کیلاش رینج میں تعینات جوانوں کو پیچھے ہٹایا جائے گا۔

یفٹیننٹ جنرل وائی کے جوشی نے کہا کہ چین کے پیچھے ہٹنے پر تھوڑی حیرانی تو ہوتی ہے کیونکہ اتنی جلدی اس کی امید نہیں تھی۔ انہوں نے کہا، امید تو نہیں تھی لیکن ہندستانی فوج نے 29-30 اگست کی رات کو LAC پر جو کیا تھا وہ ٹرننگ پوائنٹ ثابت ہوا۔ اس کے بعد چین لیول پر آکر مانا اور پھر ڈس انگیجمینٹ کے عمل کیلئے مانا۔
چین اور ہندستان کے درمیان کشدگی میں کمی آنے کے بعد ڈریگن پینگانگ جھیل کے شمالی اور جنوبی کنارے سے اپنے فوجیوں کو اور دیگر ساز و سامان کو ہٹا رہی ہے۔ ہندستانی فوج چین کی ایک۔ایک حرکت پر سخت نظر بنائے ہوئے۔ ناردن کمانڈ کے چیف لیفٹیننٹ جنرل وائی کے جوشی (Lieutenant General Yogesh Kumar Joshi) نے آج سی این این نیوز 18 کے ساتھ ایکسکلوزو بات چیت میں بتایا کہ کیسے ہندستانی فوج نے مشکل حالات میں ڈریگن کو ٹکر دی۔ انہوں نے بتایا کہ کئی مرتبہ فوج کے جوانوں نے جگاڑ تکنیک کا استعمال کرکے مشکلوں پر فتح پائی۔
Published by: Sana Naeem
First published: Feb 18, 2021 07:53 PM IST