ہوم » نیوز » عالمی منظر

ہندستان۔چین کشیدگی: پر تشدد جھڑپ میں چینی فوج کے کمانڈنگ افسر کی موت، 40 سے زیادہ زخمی: اے این آئی

نئی دہلی: ہندستان اور چین  (India-China Clash) کے فوجیوں کے درمیان لداخ کے گلوان وادی  (Galwan Valley) میں ہوئی جھڑپ کا معاملہ بڑھ گیا ہے۔ نیوز ایجنسی ANI  نے بدھ کو ذرائع کے حوالے سے کہا کہ اس جھڑپ میں چین کے 40 سے زیادہ فوجی مارے گئے ہیں۔ ان میں یونٹ کا کمانڈنگ افسر بھی شامل ہے۔ 

  • Share this:

نئی دہلی: ہندستان اور چین  (India-China Clash) کے فوجیوں کے درمیان لداخ کے گلوان وادی  (Galwan Valley) میں ہوئی جھڑپ کا معاملہ بڑھ گیا ہے۔ نیوز ایجنسی ANI  نے بدھ کو ذرائع کے حوالے سے کہا کہ اس جھڑپ میں چین کے 40 سے زیادہ فوجی مارے گئے ہیں۔ ان میں یونٹ کا کمانڈنگ افسر بھی شامل ہے۔

یہ افسر اس چینی یونٹ کا تھا جس نے ہندستانی جوانوں کے ساتھ پر تشدد جھڑپ کی۔ حالانکہ چین کی طرف سے ابھی تک اس پر کوئی آفیشیل بیان نہیں آیا ہے۔

وہیں 15-1 جون کی درمیانی رات کو گلوان وادی میں ہوئی جھڑپ میں ہندستان کے کمانڈنگ افسر سمیت 20  جوان شہید ہوگئے تھے۔ 4  جوانوں کی حالت نازک بنی ہوئی ہے، لداخ میں 14  ہزار فٹ اونچی گلوان وادی میں LAC  پر یہ جھڑپ تین گھنٹے چلی۔ یہ حملہ پتھروں، لاٹھیوں اور دھاردار چیزوں سے کیا گیا۔ اسی گلوان میں 1962 کی جنگ میں 33   ہندستانیوں کی بھی جان گئی تھی۔



منگل کو اس واقعے کے بعد دہلی میں میٹنگوں کا دور چلا۔ پہلے وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے چیف آف ڈفینس اسٹاف بپن راوت اور تینوں فوجوں کے سربراہوں کے ساتھ ایک میٹنگ کی۔ اس کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی کی زیر صدارت سکیورٹی امور کی کابینہ کی میٹنگ کی جس میں وزیر اعظم ، وزیر دفاع ، وزیر داخلہ اور وزیر خزانہ شامل تھے۔
یہ بھی پڑھیں: تائیوان نے سکھایا چین کو سبق: ملک میں گھسے چینی جنگی طیارے کو کھدیڑا
دھوکے سےحملہ کرتا رہا ہے چین، 1 اکتوبر کی آدھی رات بھی ایسے کیا تھا حملہ

مشرقی لداخ کے گلوان وادی میں چین کے ساتھ پُرتشدد جھڑپ میں کم ازکم 20 جوان شہید ہو گئے ہیں جبکہ چین کو بھی بھاری نقصان ہوا ہے۔ سرکاری ذرائع نے یہ اطلاع دی۔ اس سے قبل ہندوستانی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ اس سے پہلے اعلیٰ سطح پر جو اتفاق رائے ہوا تھا، اگر چین نے سنجیدگی سے اس پر عمل کیا ہوتا تو دونوں فریق کی طرف سے جو نقصان ہوا ہے، اس سے بچا جا سکتا تھا۔
First published: Jun 17, 2020 12:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading