ہوم » نیوز » عالمی منظر

فلپائن میں بھیانک طیارہ حادثہ : 17فوجیوں کی ہلاکت کی ہوئی تصدیق، متعددزخمی

مسلح افواج کے سربراہ سیریلو سوبیجنا نے کہا کہ یہ واقعہ بہت بدقسمتی کا ہے۔ طیارہ رن وے پر لینڈنگ سے محروم رہا اور دوبارہ لینڈ کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔ لیکن اس سے پہلے ہی یہ کریش ہو گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ فوجی طیارہ میں جنوبی کاگیان ڈی اورو شہر کے فوجی سوار تھے۔ اس حادثے کے شکار افراد کو اسپتال لے جایا گیا ہے۔ باقی لوگوں کو بچانے کا کام جاری ہے۔

  • Share this:
فلپائن میں بھیانک طیارہ حادثہ : 17فوجیوں کی ہلاکت کی ہوئی تصدیق، متعددزخمی
یہ طیارہ سولو کے پٹیکول کے پہاڑی علاقے کے قریب واقع ایک گاؤں میں گر کر تباہ ہوگیاہے

جنوبی فوجی فلپائن میں اتوار کے روز 92 فوجیوں پر مشتمل فوج کا ایک طیارہ گر کر تباہ ہوگیا۔ اطلاعات ہیں اس حادثہ میں کم سے کم فوج17 جوان ہوگئے ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ، فلپائن کے وزیر دفاع ڈیلفین لورین زانا نے ایک بیان میں کہا کہ مجموعی طور پر 17 لاشیں برآمد کرلی گئی ہیں اور 40 افراد کو بچا لیا گیا۔فضائیہ نے ایک بیان میں کہا کہ لاک ہیڈ سی 130 نامی طیارے میں لینڈنگ کے دوران خرابی ہوئی تھی۔


انہوں نے کہا کہ ’’ریسکیو کی کوششیں جاری ہیں‘‘۔تصویروں میں صوبہ سولو کے پٹیکول کے مقام پر درختوں کے درمیان طیارے کے ملبے سے آگ اور دھواں نکلتے دیکھا گیا جہاں فوج نے طویل عرصے سے باغیوں کا مقابلہ کیا تھا۔لورینزنا نے اس سے قبل رائٹرز کو بتایا کہ ابتدائی اطلاعات کے مطابق طیارے میں 92 افراد سوار تھے جن میں 3 پائلٹ اور عملے کے 5 افراد شامل تھے۔مسلح افواج کے سربراہ سیریلو سوبیجنا نے صحافیوں کو بتایا کہ گر کر تباہ ہونے والے طیارے سے کم از کم 40 افراد کو بچایا گیا اور اب ان کا علاج کرایا جارہا ہے۔



طیارہ دوبارہ لینڈ کرنے کی کوشش کے دوران گر کر ہوگیاتباہ

بتایا گیا ہے کہ یہ طیارہ سولو کے پٹیکول کے پہاڑی علاقے کے قریب واقع ایک گاؤں میں گر کر تباہ ہوگیاہے۔ حادثے کی تصویروں میں دیکھا جاسکتا ہے کہ طیارے سے آگ کے شعلے بلند ہور ہے ہیں ۔مسلح افواج کے سربراہ سیریلو سوبیجنا نے کہا کہ یہ واقعہ بہت بدقسمتی کا ہے۔ طیارہ رن وے پر لینڈنگ سے محروم رہا اور دوبارہ لینڈ کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔ لیکن اس سے پہلے ہی یہ کریش ہو گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ فوجی طیارہ میں جنوبی کاگیان ڈی اورو شہر کے فوجی سوار تھے۔ اس حادثے کے شکار افراد کو اسپتال لے جایا گیا ہے۔ باقی لوگوں کو بچانے کا کام جاری ہے۔


جنوبی فلپائن میں فوج کی بھاری موجودگی ہے ۔ اس کی وجہ اس خطے میں شدت پسند تنظیموں کی موجودگی ہے۔ ابوسیاف کے نام سے ایک تنظیم بھی ہے جو لوگوں کو اغوا کرتی ہے اور تاوان کا مطالبہ کرتی ہے۔ صوبہ سولو کے مسلم اکثریتی صوبے میں سرکاری فوجیں کئی دہائیوں سے ابو سیاف کے انتہا پسندوں سے لڑ رہی ہیں۔ اس کے دوران ، یہاں بہت ساری جھڑپیں بھی ہو رہی ہیں۔ اسی وجہ سے یہ فوجی یہاں تعینات تھے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 04, 2021 02:48 PM IST