உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نائیجیریائی فوج کے حملہ میں 35 افراد ہلاک: ایمنسٹی

    نائیجیریا میں ایمنسٹی کی سربراہ اوسائی اوزیغو نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ قانون نافذ کروانے کے لئے فضائی حملے کرنا کوئی دانشمندانہ آپشن نہیں ہے۔

    نائیجیریا میں ایمنسٹی کی سربراہ اوسائی اوزیغو نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ قانون نافذ کروانے کے لئے فضائی حملے کرنا کوئی دانشمندانہ آپشن نہیں ہے۔

    ابوجا۔ نائیجیریا کی شمال مشرقی ریاست اداماوا کے دیہی علاقوں میں نائجریائی فضائیہ کی جانب سے کئے گئے حملوں میں کم از کم 35 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      ابوجا۔  نائیجیریا کی شمال مشرقی ریاست اداماوا کے دیہی علاقوں میں نائجریائی فضائیہ کی جانب سے کئے گئے حملوں میں کم از کم 35 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ انسانی حقوق سے متعلق لندن واقع غیر سرکاری تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے آج ایک رپورٹ جاری کرکے اس کی اطلاع دی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال دسمبر کے مہینے کے دوران کئے گئے حملوں میں 35 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق دیہی علاقوں میں رہنے والے لوگوں نے بتایا کہ ایک لڑاکا طیارہ سمیت ایئر فورس کے کئی ہیلی کاپٹروں سے ان پر حملے کئے۔

      نائیجیریا میں ایمنسٹی کی سربراہ اوسائی اوزیغو نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ قانون نافذ کروانے کے لئے فضائی حملے کرنا کوئی دانشمندانہ آپشن نہیں ہے۔محترمہ اوزیغو نے کہا کہ نائیجیریا فوج کی جانب سے عوام پر اس طرح سے فضائی حملے کرنا بہت ہی چونکانے والے ہیں۔ فوج کا کام ملک کے لوگوں کی حفاظت کرنا ہے۔ایمنسٹی انٹرنیشنل کی یہ رپورٹ انسانی حقوق کے معاملے پر فوج کے لئے ایک تازہ ترین چیلنج ہے۔ ان حملوں سے چرواہوں اور کسانوں کے درمیان ایک مہلک بیماری کا اشارہ ہے جو سرکاری کنٹرول سے باہر جا رہا ہے۔

      نائجریائی فضائیہ کے ترجمان اولاٹوكنبوادیسانيہ نے اس قسم کے کسی بھی حملے سے انکار کیا ہے۔

      First published: