உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    WHO کا چونکانے والا ریسرچ، دنیا کی 99 فیصد آبادی زہریلی ہوا میں لے رہی ہے سانس، دل اور دماغ کے لئے بے حد خطرناک

    دنیا کی 99 فیصد آبادی خطرناک ہوا میں لے رہی ہے سانس۔

    دنیا کی 99 فیصد آبادی خطرناک ہوا میں لے رہی ہے سانس۔

    لینسیٹ جریدے میں ہونے والی ریسرچ میں کہا گیا ہے کہ ہوا میں نائٹروجن ڈائی آکسائیڈ (NO2) کی بڑھتی ہوئی مقدار بچوں میں دمہ کا خطرہ بڑھا رہی ہے۔ اس کی وجہ سے تقریباً 20 لاکھ کیسیز NO2 کی وجہ سے ہیں۔

    • Share this:
      7 اپریل کو ورلڈ ہیلتھ ڈے یعنی عالمی یوم صحت سے پہلے ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (WHO) نے چونکا دینے والی تحقیق کی ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ دنیا کی 99 فیصد آبادی گندی ہوا میں سانس لے رہی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ زمین پر 797 کروڑ لوگ فضائی آلودگی میں جی رہے ہیں۔

      117 ممالک پر ہوئی ریسرچ
      ڈبلیو ایچ او کی ٹیم نے 117 ممالک کے 6000 سے زیادہ شہروں کی ہوا کے معیار کی نگرانی کی۔ تحقیق کے نتائج بتاتے ہیں کہ آج پہلے سے کہیں زیادہ ممالک ہوا کے معیار پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ تاہم یہاں رہنے والے لوگوں کے جسم میں نائٹروجن ڈائی آکسائیڈ اور بہت چھوٹے ذرات کا داخلہ ہو رہا ہے۔ کم اور درمیانی آمدنی والے ممالک میں یہ مسئلہ سب سے زیادہ ہو رہا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      OMG! سوشل میڈیا پر Viral Video میں پرندوں کا انوکھا کارنامہ دیکھ کر آپ بھی رہ جائیں گے دنگ

      آخر کیوں خطرناک ہے نائیٹروجن ڈائی آکسائیڈ؟
      نائٹروجن ڈائی آکسائیڈ (NO2) ایک زہریلی گیس ہے۔ یہ فوسل فیول جلانے سے نکلتا ہے۔ یعنی یہ عام طور پر ڈرائیونگ کے دوران، پاور پلانٹس یا کھیتی کرنے سے نکلتا ہے۔ NO2 سانس کی بیماریوں جیسے دمہ کا خطرہ بڑھاتا ہے۔ اس کی وجہ سے لوگ ہر وقت کھانستے اور چھینکتے رہتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Covid-19: آپ کا مدافعتی نظام کیسے پڑتا ہے کمزور؟ کیا ہیں اس کی نشانیاں؟

      بچے ہورہے ہیں آستھما کا شکار
      لینسیٹ جریدے میں ہونے والی ریسرچ میں کہا گیا ہے کہ ہوا میں نائٹروجن ڈائی آکسائیڈ (NO2) کی بڑھتی ہوئی مقدار بچوں میں دمہ کا خطرہ بڑھا رہی ہے۔ اس کی وجہ سے تقریباً 20 لاکھ کیسیز NO2 کی وجہ سے ہیں۔ نیز، ہر سال ان میں 8.5فیصد نئے کیسز شامل ہوتے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: