உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Qatar: افغانستان قطر و ترکی کے ساتھ فلائٹ سروسز دوبارہ کرسکتا ہے شروع، آمد و رفت میں ہوگی آسانی

    اس سرویز سے آمدورفت میں ہوگی آسانی۔

    اس سرویز سے آمدورفت میں ہوگی آسانی۔

    روزنامہ صباح کی خبر کے مطابق ترکی نے افغانستان کو طالبان کے ملک پر قبضے کے بعد کابل ہوائی اڈے کو فعال کرنے میں مدد کے لیے تکنیکی اور سیکورٹی مدد کی پیشکش کی تھی۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق امریکا، برطانیہ، کینیڈا اور کئی دیگر ممالک نے افغانستان میں اپنے سفارت خانے قطر منتقل کر دیے ہیں۔

    • Share this:
      ذرائع کے مطابق افغانستان کے نائب وزیر اعظم اور طالبان کے شریک بانی ملا برادر نے وزارت خارجہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ قطر کی حکومت کو کابل ہوائی اڈے اور ملک میں کئی دیگر بین الاقوامی ہوائی اڈوں کو چلانے سے متعلق معاہدے کو مکمل کرنے کی ڈیڈ لائن دیں۔ برادر چاہتے ہیں کہ قطر کابل ہوائی اڈے کے معاہدے کو ریگولیٹ کرنے کے بارے میں جلد کوئی فیصلہ کرے تاکہ تمام فلائٹ سروسز جلد از جلد دوبارہ شروع ہو جائیں اور جلد از جلد براہ راست روٹس قائم ہو سکیں۔ اس وقت ایئرپورٹ کی ناقص سروسز کی وجہ سے پروازوں کو دبئی کے راستے مغرب جانا پڑتا ہے۔

      برادر نے اس سے قبل تاجروں اور سرمایہ کاروں پر زور دیا تھا کہ وہ افغانستان میں سرمایہ کاری کریں تاکہ ملک میں ترقی کی راہ ہموار کی جا سکے۔ انہوں نے یہ عہد بھی کیا تھا کہ امارت اسلامیہ انہیں مزید سہولیات اور تحفظ فراہم کرے گی۔

      نائب وزیر اعظم نے خارجہ امور، داخلہ، تجارت اور صنعت کی وزارتوں اور انٹیلی جنس کے ڈائریکٹوریٹ جنرل سے بھی کہا ہے کہ وہ مزید غیر ملکی سرمایہ کاروں کو راغب کریں۔ سرمایہ کاروں کو افغانستان پہنچنے پر کابل ہوائی اڈے پر ہنگامی ویزا خدمات اور دیگر سہولیات سے آغاز کرنا چاہیے۔

      افغانستان کے طلوع نیوز کے رپورٹر نے ترکی کے روزنامہ صباح کا حوالہ دیتے ہوئے گزشتہ ماہ امارت اسلامیہ کے قائم مقام وزیر اطلاعات و ثقافت خیر اللہ خیرخواہ نے کہا تھا کہ ترکی اور قطر کے درمیان معاہدہ قریب قریب ہے۔ خیرخواہ نے کہا، "ترکی اور قطر اور افغان حکومت ایک معاہدے کے قریب پہنچ چکے ہیں، اس لیے امید ہے کہ مستقبل قریب میں اسے حتمی شکل دی جائے گی۔" طلوع نیوز نے رپورٹ کیا کہ، دونوں فریقوں نے کابل ہوائی اڈے اور افغانستان میں کئی دیگر بین الاقوامی ہوائی اڈوں کو چلانے سے متعلق زیر التواء معاہدے پر تبادلہ خیال کیا۔

      Ramazan 2022: کھجور قدرت کا ایک انمول تحفہ، افطار میں اچھا ذائقہ اور فوائد حاصل کرنے کیلئے بنائے یہ ڈش


      کابل ہوائی اڈے پر قطر کے کردار نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ ستمبر 2021 سے دوحہ اور کابل کے درمیان پروازیں چل رہی ہیں، جس سے قطر کو افغانستان کے ساتھ روابط برقرار رکھنے اور طالبان حکومت سے ملنے کے لیے ممالک کا مرکز بننے دیا گیا ہے۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق امریکا، برطانیہ، کینیڈا اور کئی دیگر ممالک نے افغانستان میں اپنے سفارت خانے قطر منتقل کر دیے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں: روزے دار سحری میں پئیں یہ 5 ہائی High Calorie Shakes، دن میں کم لگے گی بھوک۔پیاس

      روزنامہ صباح کی خبر کے مطابق ترکی نے افغانستان کو طالبان کے ملک پر قبضے کے بعد کابل ہوائی اڈے کو فعال کرنے میں مدد کے لیے تکنیکی اور سیکورٹی مدد کی پیشکش کی تھی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: