உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کابل میں آرمی اسپتال میں زوردار دھماکہ، تابڑتوڑ گولیوں سے خوفناک ہوا منظر

    کابل میں دھماکہ

    کابل میں دھماکہ

    اطلاعات کے مطابق سامنے ہونے والا دھماکہ خود کش حملہ (Suicide Attack) تھا۔ موقع پر موجود عینی شاہدین کے مطابق دھماکے کی جگہ سے کافی دیر تک گولیوں کی آوازیں سنی گئیں۔

    • Share this:
      کابل: افغانستان (Afghanistan) کی راجدھانی کابل (Kabul Blast) میں منگل کی سہ پہر ایک زور دار دھماکہ ہوا۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کی معلومات کے مطابق کابل کے قریب واقع فوجی اسپتال سردار داؤد خان اسپتال میں زور دار دھماکوں اور فائرنگ کی آوازیں سنی گئیں۔ اطلاعات کے مطابق سامنے ہونے والا دھماکہ خود کش حملہ (Suicide Attack) تھا۔ موقع پر موجود عینی شاہدین کے مطابق دھماکے کی جگہ سے کافی دیر تک گولیوں کی آوازیں سنی گئیں۔

      ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ دھماکے کے نتیجے میں کوئی زخمی ہوا ہے یا نہیں۔ اس کے علاوہ دھماکے کی وجہ بھی معلوم نہیں ہو سکی ہے۔ ساتھ ہی طالبان کی جانب سے راجدھانی میں ہونے والے دھماکے کے بارے میں اب تک کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔ اگست میں افغانستان پر قبضے کے بعد سے کابل میں مسلسل دھماکے ہو رہے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر دھماکے اسلامک اسٹیٹ سے وابستہ تنظیمیں کر رہی ہیں۔



      حالانکہ طالبان نے کہا ہے کہ وہ جلد ہی اسلامک اسٹیٹ پر قابو پالیں گے اور ملک میں امن قائم کریں گے۔ تاہم جنگ زدہ ملک کے شمالی حصے میں اسلامک اسٹیٹ مضبوط ہوا ہے۔ اب تک یہ دہشت گرد تنظیم افغانستان کے مختلف علاقوں میں دھماکے کر چکی ہے۔

      اس سے قبل اگست میں بھی کابل ایئرپورٹ پر زوردار دھماکہ ہوا تھا۔ افغانستان پر طالبان کے قبضے کے بعد سے ملک چھوڑنے کے خواہاں لوگوں کی بڑی تعداد کابل ایئرپورٹ پر جمع تھی۔ 26 اگست کو ہونے والے اس دھماکے میں 100 سے زائد افراد ہلاک جبکہ 150 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

      حملوں کے حوالے سے روسی حکام کا کہنا تھا کہ کابل ایئرپورٹ کے باہر دو خودکش حملے کیے گئے۔ لوگوں کو ہوائی راستے سے باہر نکالنے کی 31 اگست کی طے شدہ تاریخ قریب آنے کے بیچ مغربی ممالک نے پہلے ہی ہوائی اڈے پر ممکنہ حملے کا خدشہ ظاہر کیا تھا
      Published by:Sana Naeem
      First published: