உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان پر طالبان کے قبضہ کے بعد ترک صدر رجب طیب اردوغان کا افغان مہاجرین کو لے کر بڑا بیان ، کہی یہ بات

    ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا کہ ترکی پہلے ہی 5 لاکھ مہاجرین کی میزبانی کررہا ہے ، اس لیے مزید مہاجرین کا بوجھ برداشت نہیں کرسکتا۔ انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کا ترکی سے زیادہ تارکین وطن کی میزبانی کی توقع رکھنا غیر حقیقی ہے۔

    ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا کہ ترکی پہلے ہی 5 لاکھ مہاجرین کی میزبانی کررہا ہے ، اس لیے مزید مہاجرین کا بوجھ برداشت نہیں کرسکتا۔ انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کا ترکی سے زیادہ تارکین وطن کی میزبانی کی توقع رکھنا غیر حقیقی ہے۔

    ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا کہ ترکی پہلے ہی 5 لاکھ مہاجرین کی میزبانی کررہا ہے ، اس لیے مزید مہاجرین کا بوجھ برداشت نہیں کرسکتا۔ انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کا ترکی سے زیادہ تارکین وطن کی میزبانی کی توقع رکھنا غیر حقیقی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      انقرہ : ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے کہا ہے کہ یورپی یونین کے کہنے پرافغان مہاجرین کا بوجھ نہیں اٹھا سکتے۔ ترک صدر نے کہا ہے کہ افغانستان میں مغربی ممالک کے لئے کام کرنے والے افغانوں کوترکی میں پناہ نہیں دے سکتے، ہمیں افغانستان میں یورپی یونین کے مشن کے مقامی ملازمین کوپناہ دینے کی درخواست ملی ہے۔ ترک صدر جب طیب اردوغان نے کہا کہ رکن ممالک نے ان افراد کے چھوٹے سے گروہ کیلئے اپنے دروازے کھولے ہیں ، جنھوں نے ان کے لیے کام کیا ہے، یہ اُمید نہ رکھی جائے کہ ترکی تیسرے ملکوں کی ذمہ داری اٹھائے گا ۔

      اردوغان نے کہا کہ ترکی پہلے ہی 5 لاکھ مہاجرین کی میزبانی کررہا ہے ، اس لیے مزید مہاجرین کا بوجھ برداشت نہیں کرسکتا۔ انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کا ترکی سے زیادہ تارکین وطن کی میزبانی کی توقع رکھنا غیر حقیقی ہے۔ خیال رہے کہ ا س سے پہلے سربراہ یورپین کمیشن نے کہا تھا کہ تمام ممالک بالخصوص یورپی ممالک افغان مہاجرین کی میزبانی کریں ۔

      ترکی نے مزید 229 شہریوں کو نکالا

      کابل سے ترکی واپسی کے خواہش مند مزید 229 ترک شہریوں کو رات کے وقت ترکی ائیر فورس کے کارگو طیارے کے ذریعے ملک سے نکال لیا گیا ہے ۔ افغانستان کے دارالحکومت کابل سے ترکی واپسی کے خواہش مند ترک شہریوں میں سے مزید 229 کو رات کے وقت ترکی ائیر فورس کے کارگو طیارے کے ذریعہ ملک سے نکال لیا گیا ہے۔ افغانستان سے ترک شہریوں کے انخلاء کا کام جاری ہے۔ حامد کرزئی انٹرنیشنل ائیر پورٹ کے سکیورٹی زون میں واپسی کے منتظر مزید 229 ترک شہریوں کو لے کر کارگو طیارہ روانہ ہو گیا ہے۔

      کابل ایئرپورٹ پر فائرنگ میں ایک کی موت

      دریں اثنا کابل ایئرپورٹ پر دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایک افغان سیکیورٹی اہلکار کی موت جب کہ تین زخمی ہوگئے ۔ بین الاقوامی خبر ایجنسی کے مطابق افغانستان کے حالات امریکہ اور اتحادی افواج کے انخلاء کے بعد مسلسل کشیدگی کی جانب بڑھ رہے ہیں، جس کے باعث اب تک سیکڑوں انسانی جانیں ضائع ہوچکی ہیں۔

      خبر ایجنسی کا کہنا ہے کہ افغان دارالحکومت کابل میں واقع انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر دہشت گردوں کی جانب سے فائرنگ کا واقعہ سامنے آیا ہے ، جس کے نتیجے میں ایک افغان سیکیورٹی اہلکار کی موت ہوگئی جب کہ تین اہلکار زخمی ہیں۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: