ہوم » نیوز » عالمی منظر

افغانستان : اشرف غنی دوسری مرتبہ صدارتی انتخابات میں کامیاب ، حریف امیدوار نے لگایا سنگین الزام

صدارتی انتخابات کے ابتدائی نتائج 19اکتوبر کو اعلان کئے جانے تھے ، لیکن کئی امیدواروں، خاص طورپر مسٹر عبداللہ کے تکنیکی خامیوں اور دھاندلی کے الزامات لگائے جانے کی وجہ سے نتائج کے اعلان میں بار بار تاخیر ہورہی تھی۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 22, 2019 10:50 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
افغانستان : اشرف غنی دوسری مرتبہ صدارتی انتخابات میں کامیاب ، حریف امیدوار نے لگایا سنگین الزام
افغانستان : اشرف غنی دوسری مرتبہ صدارتی انتخابات میں کامیاب ، حریف امیدوار نے لگایا سنگین الزام

افغانستان کے صدر اشرف غنی ایک بار پھر صدر کے عہدہ کا الیکشن جیت گئے ہیں۔ ملک کے آزاد الیکشن کمیشن کی سربراہ حواعالم نورستانی کی طرف سے اتوار کو ایک پریس کانفرنس میں جاری کئے گئے ابتدائی انتخابی نتائج کے مطابق اشرف غنی کو مجموعی طورپر 18لاکھ ووٹوں میں سے تقریباَ 51 فیصد ووٹ ملے ہیں۔ کمیشن کے مطابق 28 ستمبر کو ہوئے انتخابات میں غنی کو 50.64 فیصد ووٹ ملے جبکہ ان کے حریف عبداللہ عبداللہ کو 39.52 فیصد ووٹ ملے ہیں۔


صدارتی انتخابات کے ابتدائی نتائج 19اکتوبر کو اعلان کئے جانے تھے ، لیکن کئی امیدواروں، خاص طورپر مسٹر عبداللہ کے تکنیکی خامیوں اور دھاندلی کے الزامات لگائے جانے کی وجہ سے نتائج کے اعلان میں بار بار تاخیر ہورہی تھی۔ محترمہ نورستانی نے کہا کہ ہم نے ایمانداری، ذمہ داری، شفافیت، اعتماد اور ہمت کے ساتھ اپنا کام پورا کیا ہے۔ ہم نے ہر ووٹ کا احترام کیا ہے تاکہ ملک میں جمہوریت قائم رہے۔


اشرف غنی ۔ تصویر : رائٹرس ۔


خیال رہے کہ آخری نتائج کا اعلان ہونے سے پہلے امیدواروں کے پاس شکایت درج کرانے کا موقع ہے۔ انہیں غالباَ ایک ہفتہ کے اندر اپنی شکایت درج کرانی ہوگی ۔ نتائج کا اعلان ہونے کے فوراَ بعد عبداللہ کے دفتر نے ایک بیان میں کہا کہ وہ انہیں چیلنج کریں گے۔ بیان میں کہا گیا کہ ہم ایک بار پھر ہمارے لوگوں، حامیوں، الیکشن کمیشن اور ہمارے بین الاقوامی معاونین کو واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ہماری ٹیم اس فرضی الیکشن کے نتائج کو تب تک قبول نہیں کرے گی ، جب تک ہمارے معقول مطالبات کو سنا نہیں جاتا۔
First published: Dec 22, 2019 10:50 PM IST