உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان: قندھار، ہیرات کے بعد طالبان نے ہیلمند صوبہ کی راجدھانی لشکر گاہ پر کیا قبضہ 

    افغانستان: قندھار، ہیرات کے بعد طالبان نے ہیلمند صوبہ کی راجدھانی لشکر گاہ پر کیا قبضہ 

    افغانستان: قندھار، ہیرات کے بعد طالبان نے ہیلمند صوبہ کی راجدھانی لشکر گاہ پر کیا قبضہ 

    Taliban captures Laskar gah: طالبان نے جمعہ تک ملک کی 12 صوبائی دارالحکومتوں پر قبضہ کرلیا ہے۔ امریکی افواج کی واپسی کے درمیان وہ ملک کے دو تہائی سے زیادہ حصے پر قابض ہوچکا ہے۔

    • Share this:
      کابل: افغانستان میں طالبان (Taliban) کا کہرام مسلسل جاری ہے۔ اے این آئی کے مطابق، طالبان نے جنوبی ہیلمند صوبہ کی راجدھانی لشکر گاہ (Taliban captures Laskar gah) پر بھی قبضہ کرلیا ہے۔ واضح رہے کہ امریکہ اور معاون سیکورٹی اہلکاروں نے افغانستان میں تقریباً دو دہائی تک چلی جنگ میں سب سے زیادہ لڑائیاں ہیلمند میں لڑی تھیں۔ تازہ اطلاعات کے مطابق، جنگجووں نے جمعہ کے روز ملک کی 12 سے زیادہ صوبائی دارالحکومتوں پر قبضہ کرلیا ہے۔ امریکی فوجیوں کی واپسی کے درمیان وہ ملک کے دو تہائی سے زیادہ حصے پر قابض ہوچکے ہیں۔

      نیوز ایجنسی اے ایف پی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ مقامی افسران نے طالبان کے ساتھ جنگ بندی کا ایک معاہدہ کیا ہے۔ اس کے تحت آئندہ 48 گھنٹے کے دوران وہ باقی فوجیوں کو شہر سے باہر نکال لیں گے۔ اس درمیان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بھی اعلان کیا ہے کہ لشکر گاہ پر قبضہ کرلیا گیا ہے۔

      اس سے قبل جمعہ کی صبح طالبان نے ملک کے دوسرے بڑے شہر قندھار پر قبضہ کرلیا۔ اسے طالبان کی بڑی جیت کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ واضح رہے کہ یہ شہر کبھی طالبان کا گڑھ ہوا کرتا تھا اور یہ اہم تجارتی مرکز ہے اور سیاسی طور پر بھی کافی اہم ہے۔ اس درمیان ریاست ہائے متحدہ امریکہ نے کہا کہ وہ امریکی سفارت خانے سے ملازمین کو نکالنے میں مدد کرنے کے لئے تقریباً 3,000 فوجیوں کو واپس افغانستان بھیج رہا ہے۔ امریکہ اور ناٹو کے فوجی تقریباً 20 سال پہلے افغانستان آئے تھے اور انہوں نے طالبان حکومت کو معزول کیا تھا۔ اب امریکی سیکورٹی اہلکاروں کی پوری طرح واپسی سے کچھ ہفتے پہلے طالبان نے سرگرمیاں بڑھا دی ہیں۔

       یوروپی یونین (European Union) نے وارننگ دی ہے کہ اگر طالبان (Taliban) نے تشدد سے اقتدار حاصل کیا تو اسے بین الاقوامی برادری سے الگ تھلگ کر دیا جائے گا۔

      یوروپی یونین (European Union) نے وارننگ دی ہے کہ اگر طالبان (Taliban) نے تشدد سے اقتدار حاصل کیا تو اسے بین الاقوامی برادری سے الگ تھلگ کر دیا جائے گا۔


      یوروپی یونین نے طالبان کو دی وارننگ
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: