உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan Day: آج روایتی جوش و خروش کے ساتھ یوم پاکستان کا اہتمام، ہرطرف حب الوطنی کے نظارے

    یوم پاکستان (Pakistan Day) کو قومی جوش و جذبے اور حب الوطنی کے ساتھ منانے کے لیے بھرپور انتظامات کیے گئے ہیں۔ چونکہ یوم پاکستان، پاکستان کی تاریخ میں ایک اہم مقام رکھتا ہے اور اسے یادگار انداز میں منانے کے لیے مسلح افواج 'شکر پاریاں' (Shakarparian) پریڈ گراؤنڈ میں مشقوں میں مصروف ہیں۔

    یوم پاکستان (Pakistan Day) کو قومی جوش و جذبے اور حب الوطنی کے ساتھ منانے کے لیے بھرپور انتظامات کیے گئے ہیں۔ چونکہ یوم پاکستان، پاکستان کی تاریخ میں ایک اہم مقام رکھتا ہے اور اسے یادگار انداز میں منانے کے لیے مسلح افواج 'شکر پاریاں' (Shakarparian) پریڈ گراؤنڈ میں مشقوں میں مصروف ہیں۔

    یوم پاکستان (Pakistan Day) کو قومی جوش و جذبے اور حب الوطنی کے ساتھ منانے کے لیے بھرپور انتظامات کیے گئے ہیں۔ چونکہ یوم پاکستان، پاکستان کی تاریخ میں ایک اہم مقام رکھتا ہے اور اسے یادگار انداز میں منانے کے لیے مسلح افواج 'شکر پاریاں' (Shakarparian) پریڈ گراؤنڈ میں مشقوں میں مصروف ہیں۔

    • Share this:
      ہندوستان (India) کے پڑوسی ملک پاکستان میں ہرسال 23 مارچ کو یوم پاکستان (Pakistan Day) منایا جاتا ہے۔ یوم پاکستان کو شایان شان طریقے سے منانے کے لیے وہاں تمام تیاریوں کو حتمی شکل دے دی گئی ہے کیونکہ پاکستانی قوم ملک بھر میں اس دن کی تیاریاں کر رہی ہے۔ اسی دن قرارداد لاہور (Lahore Resolution) کی منظوری کے موقع پر برطانوی حکومت سے مسلمانوں کے لیے ایک علیحدہ ملک کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ جس کی تاریخ 23 مارچ 1940 اور مقام لاہور ہے۔

      یوم پاکستان (Pakistan Day) کو قومی جوش و جذبے اور حب الوطنی کے ساتھ منانے کے لیے بھرپور انتظامات کیے گئے ہیں۔ چونکہ یوم پاکستان، پاکستان کی تاریخ میں ایک اہم مقام رکھتا ہے اور اسے یادگار انداز میں منانے کے لیے مسلح افواج 'شکر پاریاں' (Shakarparian) پریڈ گراؤنڈ میں مشقوں میں مصروف ہیں۔ تاکہ اس دن کی سماجی و ثقافتی اہمیت کا ادراک ہوسکے۔

      اس سے ایک دن قبل مسلح افواج کے دستے اور دیگر محکمے 23 مارچ کو باوقار اور احترام کے ساتھ منائے جانے والے دن کے لیے ریہرسل اور دیگر انتظامی انتظامات میں مصروف رہیں۔ دن کا آغاز توپوں کی سلامی اور مساجد میں پاکستان کی ترقی اور خوشحالی اور عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کے خاتمے کے لیے خصوصی دعاؤں کے ساتھ ہوگا-

      قوم تحریک پاکستان کے قومی ہیروز کو ان کی قربانیوں پر بھرپور خراج تحسین پیش کرنے کے ساتھ ساتھ لگن اور پیشہ ورانہ عزم کے ساتھ کام کرنے کے اپنے عہد کی تجدید کرے گی۔ وہ 23 مارچ 1940 کو منظور ہونے والی تاریخی ’’قرارداد لاہور‘‘ کی یاد منائیں گے جو بالآخر 14 اگست 1947 کو سات سال کے اندر پاکستان کی تخلیق کا باعث بنا۔

      مزید پڑھیں: عمران خان نے OIC میٹنگ میں الاپا کشمیر راگ، مسلم ممالک سے ظاہر کی ناراضگی، سعودی عرب کا بھی آیا بیان

      قوم تحریک پاکستان کے قائدین بشمول پاکستان کے بابائے قوم محمد علی جناح کو پاکستان کے لیے بے مثال خدمات پر خراج تحسین پیش کرے گی۔ کراچی اور لاہور میں بالترتیب عہدیداران، ارکان پارلیمنٹ اور تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگ ان کی قبروں پر حاضری دیں گے۔ اس دن کی مناسبت سے تمام اہم اور تاریخی عمارتوں پر قومی پرچم لہرایا جائے گا جنہیں رنگ برنگی روشنیوں اور بونٹنگز سے سجایا گیا ہے۔ نوجوانوں نے اپنی گاڑیوں، موٹر سائیکلوں، کاروں اور موٹر سائیکلوں کو سجا رکھا ہے جبکہ شہریوں نے وطن سے محبت کے اظہار کے لیے اپنے گھروں، بازاروں اور بازاروں کو سجایا ہے۔

      جڑواں شہروں اسلام آباد اور راولپنڈی کے رہائشی بھی ریہرسل میں گہری دلچسپی لے رہے تھے اور پاکستان ایئر فورس (PAF) کے لڑاکا طیاروں کی فضائی مشقوں کا مشاہدہ کرنے کے لیے فیصل آباد اور I-8 انٹرچینج جیسے قریبی علاقوں کا دورہ کر رہے تھے۔ اس میں حصہ لینے والے دستوں میں پاکستان آرمی، پاکستان نیوی، پی اے ایف، فرنٹیئر کور، ناردرن لائٹ انفنٹری، مجاہد فورس، اسلام آباد پولیس، ٹرائی سروسز لیڈی آفیسرز، ٹرائی سروسز آرمڈ فورسز نرسنگ سروس، گرلز گائیڈ، بوائز اسکاؤٹس، سپیشل سروس گروپ شامل ہیں۔ تین سروسز سے، آرمرڈ کور، آرٹلری، آرمی ایئر ڈیفنس، سگنلز، انجینئرز، آرمی اسٹریٹجک فورس کمانڈ، اونٹ بینڈ اور پریذیڈنٹ باڈی گارڈ کے مشینی کالم شامل ہیں۔

      ضلعی انتظامیہ کے ترجمان کے مطابق انتظامیہ نے یوم پاکستان کے تمام انتظامات کو حتمی شکل دے دی ہے۔ راولپنڈی ڈسٹرکٹ پولیس اور سٹی ٹریفک پولیس (CTP) راولپنڈی نے اس طرح کے میگا ایونٹ کے شاندار انعقاد کو یقینی بنانے کے لیے خصوصی منصوبہ بندی کی ہے۔ جڑواں شہروں اسلام آباد اور راولپنڈی میں بھی کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے سخت حفاظتی اقدامات کیے گئے ہیں۔

      سی ٹی پی راولپنڈی نے یوم پاکستان کے حوالے سے بنائے گئے جامع ٹریفک پلان کے تحت تمام انتظامات کو حتمی شکل دے دی ہے۔ ترجمان نے بتایا کہ یوم پاکستان پریڈ کے دوران صبح سے پریڈ کے اختتام تک فیض آباد سے راولپنڈی اور اسلام آباد جانے والی ٹریفک بند رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ مری روڈ پر اسلام آباد کی طرف جانے والی تمام ٹریفک کو ڈبل روڈ چوک اور نائنتھ ایونیو کا ڈائیورشن پوائنٹ استعمال کرنے کی ہدایت کی جائے گی، جبکہ کورال چوک سے آنے والی ٹریفک اسلام آباد میں داخل ہونے کے لیے کھنہ پل سروس روڈ استعمال کرے گی، شمس آباد سے گزرنے کے بعد ڈبل روڈ سے گزرے گی۔

      مزید پڑھیں: راجیہ سبھا انتخابات پر ہنگامہ! کیجریوال پر برہم ہوئے نوجوت سنگھ سدھو

      انہوں نے مزید کہا کہ صبح 3 بجے کے بعد بسوں، ٹرکوں اور ٹریلرز سمیت بھاری گاڑیوں کو شہر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ مری سے آنے والی پبلک ٹرانسپورٹ گاڑیوں کو لوئر ٹوپہ، موٹروے موڑ، دانہ موڑ اور سترا مل ٹول پلازہ سے دارالحکومت کی طرف جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ شہر کی سڑکوں پر ٹریفک کو منظم کرنے کے لیے 300 سے زائد ٹریفک وارڈنز تعینات کیے گئے ہیں۔

      انہوں نے کہا کہ مختلف مقامات پر ڈائیورشنز بھی لگائے جائیں گے اور شہریوں پر زور دیا کہ وہ ٹریفک پولیس کے ساتھ تعاون کریں تاکہ ٹریفک کے مسائل کو مناسب طریقے سے حل کیا جا سکے۔

       
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: