உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امریکہ: Texas کے اسکول میں گولی باری، 21 بچوں کی موت، کئی زخمی

    Texas School Shooting: حملے کے بعد جو بائیڈن نے ایک بیان جاری کیا ہے۔ انہوں نے کہا، 'وقت آگیا ہے کہ ہم اس کے خلاف کارروائی کریں۔ ہماری دعائیں ان والدین کے لیے ہیں جو آج رات بستر پر پڑے ہیں۔'

    Texas School Shooting: حملے کے بعد جو بائیڈن نے ایک بیان جاری کیا ہے۔ انہوں نے کہا، 'وقت آگیا ہے کہ ہم اس کے خلاف کارروائی کریں۔ ہماری دعائیں ان والدین کے لیے ہیں جو آج رات بستر پر پڑے ہیں۔'

    Texas School Shooting: حملے کے بعد جو بائیڈن نے ایک بیان جاری کیا ہے۔ انہوں نے کہا، 'وقت آگیا ہے کہ ہم اس کے خلاف کارروائی کریں۔ ہماری دعائیں ان والدین کے لیے ہیں جو آج رات بستر پر پڑے ہیں۔'

    • Share this:
      نیویارک. امریکی ریاست ٹیکساس سے دل دہلا دینے والی تصاویر سامنے آ رہی ہیں۔ ایک اسکول میں ہوئی فائرنگ سے اب تک 21 طلبا ہلاک ہوچکے ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ 18 سالہ نوجوان نے طلباء پر اندھا دھند فائرنگ کی۔ اب تک کی رپورٹ کے مطابق مرنے والے بچوں کی عمریں 7 سے 10 سال کے درمیان تھیں۔ یہ سبھی گریڈ 2، 3 اور 4 کے طالب علم تھے۔ امریکی حکام کے مطابق مشتبہ حملہ آور کو بھی موت کے گھاٹ اتار دیا گیا ہے۔ مرنے والوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔

      خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق بندوق بردار راب ایلیمنٹری اسکول میں ہینڈگن اور رائفل کے ساتھ داخل ہوا۔ کہا جا رہا ہے کہ حملہ آور سان انتونیو کا رہائشی تھا۔ وائٹ ہاؤس کی پریس سکریٹری کرائن جین پیئر نے کہا کہ صدر جو بائیڈن کو فائرنگ کی اطلاع دے دی گئی ہے۔ بائیڈن ایشیا کے پانچ روزہ دورے سے واپس لوٹ رہے ہیں۔

      دادی کو بھی مارا
      سی این این کے مطابق مبینہ شوٹر نے اسکول جانے سے قبل اپنی دادی کو بھی گولی مار دی۔ اس حملے میں دو پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں۔ حملے کے بعد جو بائیڈن نے ایک بیان جاری کیا ہے۔ انہوں نے کہا، 'وقت آگیا ہے کہ ہم اس کے خلاف کارروائی کریں۔ ہماری دعائیں ان والدین کے لیے ہیں جو آج رات بستر پر پڑے ہیں۔'

      یہ بھی پڑھیں: New Helicopter کو لیکر سوالوں میں گھرے عمران خان، دبئی کے بینک اکاؤنٹ سے ہوئی ہے Payment

       

      مزید پڑھئے: 60 کی عمر میں 30 سال کی نظر آتی ہیں یہ دادی! Fitnessدیکھ کر ہم عمر کے لوگ رہ جاتے ہیں دنگ

      گزشتہ ہفتے بھی گولی باری
      امریکہ میں فائرنگ کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ گزشتہ ہفتے نیویارک کے بفیلو سٹی میں ایک سپر مارکیٹ میں فائرنگ ہوئی تھی۔ جس کے بعد جنوبی کیلیفورنیا کے ایک چرچ میں اندھا دھند فائرنگ کا واقعہ پیش آیا۔ اس کے علاوہ ہیوسٹن کے ایک مصروف بازار میں بھی فائرنگ کی گئی۔ ان حملوں کو نسلی تشدد کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: