ہوم » نیوز » عالمی منظر

سوتے ہوئے بوائے فرینڈ کو جلا دیا تھا زندہ ، اب ملی یہ بڑی سزا

امریکہ کے الاسکا میں ایک خاتون کو قتل کے جرم میں 60 سال کی سزا سنائی گئی ہے ۔ 32 سال کی گنا ورگلیو نے اپنے سوتے ہوئے بوائے فرینڈ کو زندہ جلا دیا تھا ۔

  • Share this:
سوتے ہوئے بوائے فرینڈ کو جلا دیا تھا زندہ ، اب ملی یہ بڑی سزا
سوتے ہوئے بوائے فرینڈ کو جلا دیا تھا زندہ ، اب ملی یہ بڑی سزا

امریکہ کے الاسکا میں ایک خاتون کو قتل کے جرم میں 60 سال کی سزا سنائی گئی ہے ۔ 32 سال کی گنا ورگلیو نے اپنے سوتے ہوئے بوائے فرینڈ کو زندہ جلا دیا تھا ۔ عدالت نے گنا کو قتل کا قصور وار مانتے ہوئے پیر کو سزا سنائی ۔ جج نے کہا کہ یہ ایک انتہائی بھیانک جرم تھا ۔


الاسکا کورٹ نے مانا کہ گنا ورگلیو نے اپنے بوائے فرینڈ مائیکل گونزالویز کو اس وقت پٹرول ڈال کر آگ لگادیا ، جب وہ گھر میں صوفے پر سو رہا تھا ۔ آگ لگانے کے بعد مائیکل مدد کیلئے چیخنے لگا ، لیکن ملزم خاتون نے گھر کا دروازہ بند کردیا اور وہاں سے فرار ہوگئی تھی ۔


ڈیلی اسٹار کی رپورٹ کے مطابق عدالت نے گنا ورگلیو کو 99 سال کی سزا سنائی تھی ، لیکن بعد میں 39 سال سزا کم کردی ۔ اس قتل کیلئے اس کی رہائی کے بعد اس کو 10 سال کی عبوری سزا بھی دی گئی تھی ۔ سزا سنائے جانے کے بعد گنا عدالت میں رونے لگی ۔ اس نے جج کو بتایا کہ اس دوران اس کی ذہنی حالت ٹھیک نہیں تھی ۔


گنا ورگلیو نے جج سے کہا کہ میں نے جو کیا اس کا مجھے افسوس ہے ، میں اس کو کبھی واپس نہیں لاسکتی ۔ اس نے کہا کہ میرا مائیکل کو مارنے کا کوئی مقصد نہیں تھا ، لیکن آپ کسی ایسے معنی سے باہر نہیں نکل سکتے ، جس کا کوئی مطلب نہیں ۔ مائیکل کے ساتھ جو کچھ بھی ہوا ، وہ میری دماغی حالت کی وجہ سے ہوا تھا ۔

گنا ورگلیو کے بھائی ریزنالڈ کارنی نے کہا کہ اس نے 20 سال کی عمر میں ڈرگس لینا شروع کردیا تھا ۔ گنا ماریوآنا ، کوکین ، آکسیٹوسن لیتی تھی ۔ جنوری 2012 میں وہ تقریبا دو ہفتہ کیلئے غائب بھی ہوگئی تھی ۔
First published: Oct 15, 2019 09:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading