ہوم » نیوز » عالمی منظر

چین پر پلٹ وار کے لئے امریکہ سمیت 8 ممالک کے اراکین پارلیمنٹ نے بنایا نیا اتحاد

امریکہ (America) سمیت پوری دنیا کے 8 جمہوری ممالک (Democratic Countries) کے سینئر اراکین پارلیمنٹ نے کراس پارلیمنٹری الائنس (Cross Parliamentary Alliance) کی شروعات کی ہے۔

  • Share this:
چین پر پلٹ وار کے لئے امریکہ سمیت 8 ممالک کے اراکین پارلیمنٹ نے بنایا نیا اتحاد
چین پر پلٹ وار کے لئے امریکہ سمیت 8 ممالک کے اراکین پارلیمنٹ نے بنایا نیا اتحاد

نئی دہلی: امریکہ (America) سمیت پوری دنیا کے 8 جمہوری ممالک (Democratic Countries) کے سینئر اراکین پارلیمنٹ نے کراس پارلیمنٹری الائنس (Cross Parliamentary Alliance) کی شروعات کی ہے۔ اس اتحاد کی شروعات چین کے بڑھتے اثر کے انٹرنیشنل ٹریڈ (International Trade)، سیکورٹی اور شہری حقوق (Human Rights) کے لئے پیدا ہونے والے خطرات پر پلٹ وار کرنے کے لئےکیا گیا ہے۔


بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق، چین کو لے کر کراس پارلیمانی اتحاد (Cross Parliamentary Alliance) جسے جمعہ کو لانچ کیا گیا، ایسے وقت میں بنایا گیا ہے جب امریکہ، چین کے بڑھتے اقتصادی اور سفارتی دبدبے کو کم کرنے کے لئے ایک اتحاد بنانے کے معاملے میں جدوجہد کر رہا ہے۔ حال ہی میں ہانگ کانگ (Hong Kong) میں قومی سلامتی قانون (National Security Legislation) نافذ کرنے کے بیجنگ کے قدم کی مذمت کرنے میں امریکہ نے بیرون ممالک کی حکومتوں کی قیادت کی تھی، اس قانون کو شہر کی خود مختاری کے لئےخطرہ بتایا جا رہا ہے۔


امریکہ سمیت پوری دنیا کے 8 جمہوری ممالک کے سینئر اراکین پارلیمنٹ نے کراس پارلیمنٹری الائنس کی شروعات کی ہے۔ فائل فوٹو
امریکہ سمیت پوری دنیا کے 8 جمہوری ممالک کے سینئر اراکین پارلیمنٹ نے کراس پارلیمنٹری الائنس کی شروعات کی ہے۔ فائل فوٹو


چین، کمیونسٹ پارٹی کے اقتدار کے تحت ایک عالمی چیلنج کی طرح

اس گروپ نے کہا ہے کہ اس ہدف ’پیپلز ری پبلک آف چین سے متعلقہ موضوعات پر مناسب اور مربوط جوابات کی تعمیر اور اس سے منسلک موضوعات پر ایک سرگرم اور اسٹریٹجک نقطہ نظر بنانا ہے’۔ امریکی ری پبلکن سینیٹر مارکو روبیو اور ڈیموکریٹ باب مینینڈیز، سابق جاپانی وزیر جنرل ناکا ٹانی، یوروپین پارلیمنٹ کے بیرون ممالک امورکی کمیٹی کے رکن میریم لیکسین اور برطانیہ کے رکن پارلیمنٹ ڈنکن اسمتھ نئے لانچ کئے گئے گروپ کے سبھی شریک چیئرمین ہیں۔ بیجنگ کے جانے مانے نقاد اور بیجنگ میں امریکی کارروائی کی حمایت کرنے والے امریکی پارلیمنٹ روبیو نے ٹوئٹر پر ایک ویڈیو پیغام میں کہا، ’چین، چینی کمیونسٹ پارٹی (Chinese Communist Party) کے اقتدار کے تحت، ایک عالمی چیلنج کو دکھاتا ہے۔

بیجنگ نے زور دے کر کہا- ’چین کی سبقت دنیا کے لئے خطرے کی بات نہیں’۔

بیجنگ نے بار بار زور دیا ہے کہ ہانگ کانگ میں جو حالات ہیں، وہ اس کا داخلی مسئلہ ہے۔ جبکہ وہ یہ بھی کہتا ہے کہ چین (China) کی بڑے سطح پر اقتصادی اور سفارتی سبقت دنیا کے لئےکوئی خطرناک بات نہیں ہے۔ بیجنگ (Beijing) میں گزشتہ جمعہ کو چین کے وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے ایک پریس بریفنگ میں کہا تھا، ہم نے سیاسی لیڈروں کے ایک چھوٹے گروپ کے حقائق کا احترام کرنے کی اپیل کی ہے، بین الاقوامی تعلقات کے عام ضوابط کا احترام کرنے کی، کولڈ وار کی سوچ کو چھوڑنے کی، گھریلو موضوعات میں مداخلت کرنے اور خود غرض مفادات کے لئے سیاسی اقدامات کرنے کی اپیل کی ہے’۔ واضح رہے کہ چین کے خلاف بنے اتحاد میں امریکہ، جرمنی، برطانیہ، جاپان، آسٹریلیا، کناڈا، سوئیڈن، ناروے اور اس کے علاوہ یوروپین پارلیمنٹ (European Parliament) کے اراکین پارلیمنٹ بھی شامل ہیں۔
First published: Jun 06, 2020 08:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading