ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکہ کا میانمار سے روہنگیا مسلمانوں کے خلاف تشدد کے سلسلہ کو فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ

امریکہ کے ریلیف ڈپارٹمنٹ کے سربراہ مارک گرین آج میانمارسے روہنگیا مسلمانوں کے خلاف تشدد کے خاتمے اور انسانی حقوق کے کارکنوں اور میڈیا کارکنوں کو کسی بھی پابندی کے بغیر ملک میں داخل ہونے کی اجازت دینے کے لئے میانمار سے اپیل کی ۔

  • UNI
  • Last Updated: May 17, 2018 11:41 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
امریکہ کا میانمار سے روہنگیا مسلمانوں کے خلاف تشدد کے سلسلہ کو فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ
روہنگیا پناہ گزیں: فائل فوٹو۔

ڈھاکہ : امریکہ کے ریلیف ڈپارٹمنٹ کے سربراہ مارک گرین آج میانمارسے روہنگیا مسلمانوں کے خلاف تشدد کے خاتمے اور انسانی حقوق کے کارکنوں اور میڈیا کارکنوں کو کسی بھی پابندی کے بغیر ملک میں داخل ہونے کی اجازت دینے کے لئے میانمار سے اپیل کی ۔ بنگلہ دیش کے تین دن کے دورے پرآنے والے مسٹر گرین، آج روہنگیا پناہ گزین کیمپ پہنچے ۔ اس دوران انہوں نے روہنگیا مسلمانوں کی مدد فراہم کرنے کے لئے 440 لاکھ ڈالر کی اضافی رقم کا اعلان کیا۔

میانمار کے لئے روانہ ہونے سے قبل، ڈھاکہ میں صحافیوں کو بتایا، ’’آج میں میانمار جا رہا ہوں اور حکومت وہاں تشدد کا خاتمہ کرنے اور میڈیا کو اپنا کام کرنے کی اجازت دینے کی اپیل کروں گا۔ یہ انسانی بحران ایک عالمی چیلنج ہے اور ہماری حکومت بین الاقوامی برادری کے ساتھ مل کر بنگلہ دیش کی حمایت کے لئے کام کرے گی‘‘۔

واضح رہے کہ میانمار کے رخین صوبے میں تشدد کے باعث تقریبا سات لاکھ روہنگیا مسلمان بنگلہ دیش منتقل ہوگئے ہیں۔ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اسی مہینے یقین دہانی کرائی تھی کہ بنگلہ دیش کو میانمار کے روہنگیا پناہ گزینوں کے بحران سے نمٹنے میں تعاون کیا جائے گا۔

First published: May 17, 2018 11:41 PM IST