ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکی مالی امداد روکنے پر فلسطینی پناہ گزینوں میں سخت ناراضگی، اسرائیل نے کیا خوشی کا اظہار

امریکہ کے فیصلے سے فلسطینی پناہ گزینوں کا ماننا ہے کہ ان کی حالت مزید خراب ہوجائے گی۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 02, 2018 12:32 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
امریکی مالی امداد روکنے پر فلسطینی پناہ گزینوں میں سخت ناراضگی، اسرائیل نے کیا خوشی کا اظہار
فلسطینی پناہ گزیں: فائل فوٹو

یروشلم:  فلسطینی پناہ گزینوں نے امریکہ کی جانب سے اقوام متحدہ ایجنسی کے ذریعہ دی جانے والی مالی مدد روکنے پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے خبردار کیا کہ مغربی ایشیا میں اس سے غصہ، غریبی اور عدم استحکام میں اضافہ ہوگا۔

پناہ گزینوں نے سنیچر کو اس قدم پر سخت رد عمل ظاہر کیا ہے۔ غزہ میں 8 پناہ گزینوں کے باپ نشاط نے کہا کہ اس سے پناہ گزینوں کی حالت مزید خراب ہوجائے گی اور وہ غیر قانونی کارروائیوں میں ملوث ہوجائیں گے۔


واضح رہے کہ امریکہ نے جمعہ کو اعلان کیا تھا کہ وہ فلسطینی پناہ گزینوں کی مدد کرنے والی اقوام متحدہ کی امدادی ایجنسی (یو این آر ڈبلیو) کی حمایت نہیں کرے گا، جس کے سبب ایجنسی میں مالی بحران اور فلسطینی قیادت کے ساتھ کشیدگی میں اضافہ ہوگیا ہے۔


یو این آر ڈبلیو گزشتہ 68 برسوں سے اردن، لبنان، شام اور مغربی کنارے اورغزہ میں رہنے والے 50 لاکھ فلسطینی پناہ گزینوں کو مالی امداد مہیا کرا رہی تھی۔ سال 1948 میں اسرائیلی جنگ کے بعد 7 لاکھ سے زائد فلسطینیوں کو اپنا گھر بار چھوڑنا پڑا تھا۔

دوسری جانب اسرائیل نے امریکہ  کی جانب سے اقوام متحدہ ایجنسی کے ذریعہ فلسطینی پناہ گزینوں کو دی جانے والی امداد میں کٹوتی کرنے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔ اسرائیل کے خفیہ وزیراسرائیل کاٹج نے اپنے ٹوئٹر پر لکھا کہ امریکہ کا یہ فیصلہ استقبال کے لائق ہے اور یہ ان کے حقیقت پسندانہ نظریئے کو ظاہر کرتا ہے

 
First published: Sep 02, 2018 12:30 PM IST