உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    چین - روس کی حمایت، لیکن مغربی ممالک کے نشانے پر ہے طالبان، سب نے بتایا خطرہ

    چین - روس کی حمایت، لیکن مغربی ممالک کے نشانے پر ہے طالبان، سب نے بتایا خطرہ

    چین - روس کی حمایت، لیکن مغربی ممالک کے نشانے پر ہے طالبان، سب نے بتایا خطرہ

    جرمنی کی چانسلر اینجیلا مرکیل (Angela Merkel) نے کہا ہے کہ افغانستان (Afghanistan) میں طالبان (Taliban) کی اقتدار میں واپسی ’بے خطرناک اور ڈرامائی‘ ہے۔ چانسلر اینجیلا مرکیل نے کہا ہے کہ ’یہ لاکھوں افغانیوں کے لئے بے حد خطرناک صورتحال ہے۔ ان لوگوں نے مغربی برادری کی مدد سے ایک آزاد اور پاک معاشرہ بنانے کے لئے بہت محنت کی ہے۔ وہیں چین اور روس تعلقات بہتر کرنے میں لگے ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: افغانستان (Afghanistan) کے اقتدار پر طالبان (Taliban) کے قابض ہونے کے معاملے میں امریکہ (America) کو عالمی سطح پر تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، وہ چوطرفہ طور پر تنقید سے گھرے ہوئے ہیں۔ حالانکہ امریکی صدر جو بائیڈن (Joe Biden) واضح کرچکے ہیں کہ وہ اپنے فیصلے پر قائم ہیں۔ اس درمیان جرمنی اور فرانس نے بھی افغانستان کی صورتحال اور حادثات پر ردعمل ظاہر کیا ہے۔ دوسری جانب چین اور روس طالبان کے ساتھ اپنے بہتر تعلقات قائم کرنے میں مصروف ہیں۔

      جرمنی کی چانسلر اینجیلا مرکیل نے کہا ہے کہ طالبان کی اقتدار میں واپسی ’بے خطرناک اور ڈرامائی‘ ہے۔ چانسلر اینجیلا مرکیل نے کہا ہے کہ ’یہ لاکھوں افغانیوں کے لئے بے حد خطرناک صورتحال ہے۔ ان لوگوں نے مغربی برادری کی مدد سے ایک آزاد اور پاک معاشرہ بنانے کے لئے بہت محنت کی ہے۔ ساتھ ہی جمہوریت کو مضبوط کرنے، تعلیم اور خواتین کی صورتحال پر زور دیا۔

      بورس جانسن نے کہا- ہمیں متحد ہونا ہوگا

      وہیں برطانیہ کے وزیر اعظم بورس جانسن نے جی -7 گروپ کی ایک ورچوئل میٹنگ میں طالبان کے خلاف اجتماعی اتحاد کی اپیل کی ہے۔ اس سے قبل جمعہ کو بھی بورس جانسن نے کہا تھا کہ وہ اور ان کے معاونین افغانستان کو ایک بار پھر دہشت گردانہ زمین نہیں بننے دیں گے۔

      فرانسیسی صدر نے کیا کہا؟

      فرانسیسی صدر ایمینوئل میکرون نے کہا کہ افغانستان کو کسی بھی قیمت پر دہشت گردی کی نرسری نہیں بننے دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ بین الاقوامی نظام کے لئے خطرہ ہے۔ اگر پوری دنیا میں امن وامان چاہئے تو ہمیں اس کے خلاف کھڑا ہونا ہوگا۔ میکرون نے اقوام متحدہ سلامتی کونسل سے بھی اس معاملے میں قدم اٹھانے کی اپیل کی ہے۔

      چین - پاکستان کے بعد اب روس بھی حمایت میں

      چین - پاکستان پہلے طالبان کے اقتدار کی حمایت واضح طور پر کرچکے ہیں۔ اس فہرست میں روس کا نام بھی جڑ گیا ہے۔ افغانستان میں روس کے سفیر نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان نے پہلے کے مقابلے کابل کو زیادہ محفوظ کر دیا ہے۔ واضح رہے کہ روس کے خلاف ہی طالبان وجود میں آیا تھا۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: