உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Road Accidents in Turkey: ترکی میں دو سڑک حادثات میں کم از کم 34 افراد ہلاک، وجہ جان کر آپ ہوں گے حیران

    ترکی کی سرکاری انادولو پریس ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ کچھ دیر پہلے اسی مقام پر تین گاڑیوں کا حادثہ پیش آیا تھا۔ ہنگامی جواب دہندگان پہلے ہی جائے وقوعہ پر موجود تھے جب لاری نے ہجوم میں ہل چلایا۔ وزیر انصاف بیکر بوزداگ نے ٹوئٹر پر اعلان کیا کہ استغاثہ نے حادثات کی دو تحقیقات شروع کی ہیں۔

    ترکی کی سرکاری انادولو پریس ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ کچھ دیر پہلے اسی مقام پر تین گاڑیوں کا حادثہ پیش آیا تھا۔ ہنگامی جواب دہندگان پہلے ہی جائے وقوعہ پر موجود تھے جب لاری نے ہجوم میں ہل چلایا۔ وزیر انصاف بیکر بوزداگ نے ٹوئٹر پر اعلان کیا کہ استغاثہ نے حادثات کی دو تحقیقات شروع کی ہیں۔

    ترکی کی سرکاری انادولو پریس ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ کچھ دیر پہلے اسی مقام پر تین گاڑیوں کا حادثہ پیش آیا تھا۔ ہنگامی جواب دہندگان پہلے ہی جائے وقوعہ پر موجود تھے جب لاری نے ہجوم میں ہل چلایا۔ وزیر انصاف بیکر بوزداگ نے ٹوئٹر پر اعلان کیا کہ استغاثہ نے حادثات کی دو تحقیقات شروع کی ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, Indiaistal
    • Share this:
      مقامی میڈیا کے مطابق ہفتے کے روز دو الگ الگ سڑک حادثات میں کم از کم 34 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے۔ جائے واقعہ پر تصادم ہوا تھا۔ ایک بس اور ایمبولینس کے پہلے حادثے میں گازیانٹیپ صوبے (Gaziantep ) میں ایک موٹر وے پر 15 افراد ہلاک اور 31 زخمی ہوئے ہیں۔

      گورنر داوت گل (Davut Gul) نے کہا کہ اس سے قبل صوبائی دارالحکومت غازیانتپ اور نزپ کے درمیان روٹ پر ایک بس، ایک ایمرجنسی ٹیم اور ایک ایمبولینس کے درمیان حادثہ پیش آیا تھا۔ ڈی ایچ اے نیوز ایجنسی کا کہنا ہے کہ ایک مسافر بس ایمبولینس، فائر فائٹنگ ٹرک اور صحافیوں کو لے جانے والی گاڑی سے ٹکرا گئی تھی جو پچھلے حادثے کے مقام پر تھی۔

      مقامی میڈیا کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں تین پیرا میڈیکس، تین فائر فائٹرز اور ترکی کی الہاس نیوز ایجنسی کے دو صحافی شامل ہیں۔ ڈی ایچ اے کی تصاویر میں ایمبولینس کا پچھلا حصہ پھٹ گیا اور بس کو نقصان پہنچا۔ مقامی حکام کے مطابق اس وقت بس کے ڈرائیور سے پوچھ گچھ کر رہے ہیں تاکہ یہ معلوم کرنے کی کوشش کی جا سکے کہ کیا ہوا ہے۔
      استغاثہ پہلے سے ہی 250 کلومیٹر دور (155 میل) دور چند گھنٹے پہلے ایک دوسرے جان لیوا حادثے کی تحقیقات کر رہے ہیں، جو اس وقت بھی ہوا جب ہنگامی خدمات اس جگہ پر ایک پہلے واقعے میں شرکت کر رہی تھیں۔ اس موقع پر ماردین صوبے کے ڈیرک کے مقام پر ایک ٹرک ڈرائیور کے پیدل چلنے والوں پر چڑھائی کے بعد کم از کم 19 افراد ہلاک اور تقریباً 30 زخمی ہوئے، وزیر صحت فرحتین کوکا نے ٹویٹر پر لکھا، اس سے قبل 16 کی تعداد کو اپ ڈیٹ کیا۔

      کوکا نے لکھا کہ ماردین صوبے کے ڈیرک میں یہ حادثہ ایک لاری پر بریک لگنے کے بعد پیش آیا، جو ایک ہجوم سے ٹکرا گئی۔ انہوں نے مزید کہا کہ مزید 26 زخمی ہوئے، جن میں سے چھ کی حالت تشویشناک ہے۔ ترک میڈیا نے فوٹیج شیئر کی ہے کہ ایک ڈرائیور اپنے ٹرک کا کنٹرول کھو بیٹھا، پھر قریبی گاڑیوں اور پیدل چلنے والوں کی طرف بھاگنے کی کوشش میں۔

      ترکی کی سرکاری انادولو پریس ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ کچھ دیر پہلے اسی مقام پر تین گاڑیوں کا حادثہ پیش آیا تھا۔ ہنگامی جواب دہندگان پہلے ہی جائے وقوعہ پر موجود تھے جب لاری نے ہجوم میں ہل چلایا۔ وزیر انصاف بیکر بوزداگ نے ٹوئٹر پر اعلان کیا کہ استغاثہ نے حادثات کی دو تحقیقات شروع کی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں: 





      انادولو ایجنسی کی خبر کے مطابق صدر رجب طیب اردگان (Recep Tayyip Erdogan) نے وزیر داخلہ سلیمان سویلو کو جائے حادثہ پر بھیجا ہے اور وہ ہفتے کے روز بعد میں متوقع تھے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: