Choose Municipal Ward
    CLICK HERE FOR DETAILED RESULTS
    ہوم » نیوز » عالمی منظر

    بنگلہ دیش میں 1971 میں جنگی جرائم کے لئے جماعت اسلامی کے سربراہ کو دی گئی پھانسی

    ڈھاکہ۔ بنگلہ دیش کی سب سے بڑی اسلامی پارٹی جماعت اسلامی کے رہنما مطیع الرحمان نظامی کو 1971 کی جنگ آزادی کے جرم کے لئے آج ( منگل) دیررات پھانسی دے دی گئی۔

    • Pradesh18
    • Last Updated: May 11, 2016 09:15 AM IST
    • Share this:
    • author image
      NEWS18-Urdu
    بنگلہ دیش میں 1971 میں جنگی جرائم کے لئے جماعت اسلامی کے سربراہ کو دی گئی پھانسی
    ڈھاکہ۔ بنگلہ دیش کی سب سے بڑی اسلامی پارٹی جماعت اسلامی کے رہنما مطیع الرحمان نظامی کو 1971 کی جنگ آزادی کے جرم کے لئے آج ( منگل) دیررات پھانسی دے دی گئی۔

    ڈھاکہ۔ بنگلہ دیش کی سب سے بڑی اسلامی پارٹی جماعت اسلامی کے رہنما مطیع الرحمان نظامی کو 1971 کی جنگ آزادی کے جرم کے لئے آج ( منگل)  دیررات پھانسی دے دی گئی۔یہ اطلاع حکام نے دی ہے۔ نظامی کی پھانسی کی سزا کی وجہ سے ڈھاکہ کی جیل میں سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ سپریم کورٹ کی طرف سے پھانسی کی سزا کا آخری فیصلہ صادرکر دیے جانے کے بعد جیل میں پھانسی کی سزا دینے کا بندوبست کر لیا گیا تھا۔


    بنگلہ دیش کی جماعت  اسلامی پارٹی کے 73 سال کے لیڈر نے صدر سے معافی مانگنے سے انکار کر دیا تھا۔ پھانسی کے عمل کے گواہ رہے ایک پولیس افسر نے بتایا کہ نظامی کو ڈھاکہ سینٹرل جیل میں آدھی رات 12 بجے پھانسی پر لٹکایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ پھانسی کا عمل مکمل ہو گیا ہے اور 20 منٹ سے زیادہ وقت تک پھانسی پر لٹکے رہنے کے بعد سول سرجن نے انہیں مردہ قرار دے دیا۔


    نظامی کی پھانسی کی سزا سے مسلم اکثریتی بنگلہ دیش میں کشیدگی بڑھ سکتی ہے۔ بنگلہ دیش میں سیکولر بلاگر مصنفین، پبلشرز اور اقلیتوں کے قتل کی وجہ سے پہلے ہی کشیدگی ہے۔

    First published: May 11, 2016 08:57 AM IST
    corona virus btn
    corona virus btn
    Loading