ہوم » نیوز » عالمی منظر

بنگلہ دیشی مولانا نے Facebook  کے اس اموجی کو بتایا غلط، اور جاری کیر دیا فتویٰ

مولانا احمد اللہ نے فیس بک پر لوگوں کا مزاق اڑانے کیلئے ہنسی یعنی ہاہا والے اموجی کے استعمال کرنے کے خلاف فتوی جاری کیا ہے۔

  • Share this:
بنگلہ دیشی مولانا نے Facebook  کے اس اموجی کو بتایا غلط، اور جاری کیر دیا فتویٰ
مولانا احمد اللہ نے فیس بک پر لوگوں کا مزاق اڑانے کیلئے ہنسی یعنی ہاہا والے اموجی کے استعمال کرنے کے خلاف فتوی جاری کیا ہے۔

بنگلہ دیش (Bangladesh) کے ایک مشہور و معروف مولانا نے فیس بک (Facebook) کے ہاہا اموجی کے خلاف فتوی جاری کیا ہے۔ سوشل میڈیا پر کافی مقبولیت پانے والے مولانا احمد اللہ نے فیس بک پر لوگوں کا مزاق اڑانے کیلئے ہنسی یعنی ہاہا والے اموجی کے استعمال کرنے کے خلاف فتوی جاری کیا ہے۔ احمد اللہ کے فیس بک اور یوٹیوب پر 30 لاکھ سے زیادہ فالوور ہیں۔ وہ اکثر ٹی وی پر آتے ہیں اور مسلم اکثریتی ملک بنگلہ دیش میں مذہبی موضوعات پر بحث کرتے ہیں۔ سنیچر کو مولانا نے ایک تین منٹ کا ویڈیو پوسٹ کیا اور فیس بک پر لوگوں کا مذاق اڑانے کا ذکر کیا۔ اس کے بعد انہوں نے فتوی جاری کر دیا۔ ساتھ ہی یہ بھی بتایا کہ یہ کس طرح سے مسلموں کیلئے حرام ہے۔ احمد اللہ نے کہا، آج کل ہم فیس بک کے ہاہا اموجی کا استعمال لوگوں کا مذاق اڑانے کیلئے کرتے ہیں۔ ان کے اس ویڈیو کو اب تک بیس لاکھ بار دیکھا جا چکا ہے۔


مولانا احمد اللہ نے کہا، اگر آپ صرف مذاق کیلئے ہاہا اموجی کا استعمال کرتے ہیں اور کنٹینٹ پوسٹ کرنے والی منشا بھی یہی ہے تو یہ ٹھیک ہے لیکن اگر آپ کا ردعمل کا ارادہ پوسٹ کرنے والے کا مزاق اڑانے کیلئے ہاہا اموجی کا استعمال نہیں کریں۔ اگر آپ ایک مسلم کو ٹھیس پہنچائیں گے تو وہ ایسی زبان کا استعمال کرے گا جس کے بارے میں آپ نے سوچا نہیں ہوگا۔


مولانا کے اس ویڈیو پر ان کے ہزاروں کی تعداد فالوورس نے ردعمل دیا ہے۔ زیادہ تر لوگوں نے اس پر مثبت تبصرہ کیا ہے۔ وہیں سیکڑوں کی تعداد میں ایسے بھی ہیں جنہوں نے ہاہا اموجی بناکر اس فتوے کا مزاق بھی اڑایا۔ احمد اللہ بنگلہ دیش کی نئی نسل کے مولانا ہیں جو انٹرنیٹ پر کافی ایکٹو ہیں۔ ان کے ایک۔ایک ویڈیو کافی مقبول ہیں اور ان پر لاکھوں ویوز آتے ہیں۔

Published by: Sana Naeem
First published: Jun 24, 2021 05:25 PM IST