உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بائیڈن کی جانب سےنئےبین الاقوامی سفری ویکسین کےقوانین نافذ، چنددن میں پابندیاں ہوں گی ختم

    صدر جو بائیڈن Joe Biden نے پیر کے روز ایک حکم نامے پر دستخط کیے جس میں زیادہ تر غیر ملکی قومی ہوائی مسافروں کے لیے ویکسین کی نئی ضروریات عائد کی گئی ہیں۔

    صدر جو بائیڈن Joe Biden نے پیر کے روز ایک حکم نامے پر دستخط کیے جس میں زیادہ تر غیر ملکی قومی ہوائی مسافروں کے لیے ویکسین کی نئی ضروریات عائد کی گئی ہیں۔

    غیر معمولی امریکی سفری پابندیاں پہلی بار 2020 کے اوائل میں کوورنا وائرس COVID-19 کے پھیلاؤ سے نمٹنے کے لیے لگائی گئی تھیں۔ یہ قوانین زیادہ تر غیر امریکی شہریوں پر عائد رہیں- جن میں ہندوستانی شہری بھی شامل ہیں۔

    • Share this:

      وائٹ ہاؤس White House نے بتایا کہ صدر جو بائیڈن Joe Biden نے پیر کے روز ایک حکم نامے پر دستخط کیے جس میں زیادہ تر غیر ملکی قومی ہوائی مسافروں کے لیے ویکسین کی نئی ضروریات عائد کی گئی ہیں۔ وہیں چین، ہندوستان اور یورپ کے بیشتر ملکوں سے آنے والوں مسافروں کے لیے 8 نومبر 2021 سے سخت سفری پابندیاں ہٹا دی جائے گی۔


      غیر معمولی امریکی سفری پابندیاں پہلی بار 2020 کے اوائل میں کوورنا وائرس COVID-19 کے پھیلاؤ سے نمٹنے کے لیے لگائی گئی تھیں۔ یہ قوانین زیادہ تر غیر امریکی شہریوں پر عائد رہیں جو گزشتہ 14 دنوں کے اندر برطانیہ میں رہے۔ اسی طرح 26 ممالک آئرلینڈ، چین، ہندوستان، جنوبی افریقہ، ایران اور برازیل شامل ہیں۔

      بائیڈن کی جانب سے جاری اعلان میں کہا گیا کہ ’’ریاستہائے متحدہ امریکہ کے مفاد میں ہے کہ وہ ملک بہ ملک پابندیوں سے ہٹ جائے جو پہلے کورونا کے دوران لاگو کی گئی تھیں‘‘۔
      بائیڈن کی جانب سے جاری اعلان میں کہا گیا کہ ’’ریاستہائے متحدہ امریکہ کے مفاد میں ہے کہ وہ ملک بہ ملک پابندیوں سے ہٹ جائے جو پہلے کورونا کے دوران لاگو کی گئی تھیں‘‘۔


      • فضائی سفری پالیسی


      بائیڈن کی جانب سے جاری اعلان میں کہا گیا کہ ’’ریاستہائے متحدہ امریکہ کے مفاد میں ہے کہ وہ ملک بہ ملک پابندیوں سے ہٹ جائے جو پہلے کورونا COVID-19 کے دوران لاگو کی گئی تھیں اور ایک ایسی فضائی سفری پالیسی کو اپنانا جو بنیادی طور پر ویکسینیشن پر انحصار کرتی ہے تاکہ بین الاقوامی ہوائی سفر کی محفوظ بحالی کو آگے بڑھایا جا سکے‘‘۔

      وائٹ ہاؤس نے تصدیق کی ہے کہ 18 سال سے کم عمر کے بچے ویکسین کی نئی ضروریات سے مستثنیٰ ہیں جیسا کہ کچھ طبی مسائل والے لوگ ہیں۔ تقریباً 50 ممالک کے غیر سیاح مسافر جن کی ملک گیر ویکسینیشن کی شرح 10 فیصد سے کم ہے وہ بھی قواعد سے استثنیٰ کے اہل ہوں گے۔ استثنیٰ حاصل کرنے والوں کو عام طور پر ریاستہائے متحدہ میں پہنچنے کے بعد 60 دنوں کے اندر ویکسین لگانے کی ضرورت ہوگی۔ ان ممالک میں نائیجیریا، مصر، الجیریا، آرمینیا، میانمار، عراق، نکاراگوا، سینیگال، یوگنڈا، لیبیا، ایتھوپیا، زیمبیا، کانگو، کینیا، یمن، ہیٹی، چاڈ اور مڈغاسکر شامل ہیں۔

      معاشی بحالی کے امکانات
      محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا کہ خاندان اور دوست ایک دوسرے کو دوبارہ دیکھ سکتے ہیں، سیاح ہمارے حیرت انگیز مقامات پر جا سکتے ہیں۔ یہ پالیسی معاشی بحالی کو مزید فروغ دے گی‘‘۔

      بائیڈن انتظامیہ نے یہ بھی تفصیلی تقاضوں پر عمل کیا ہے کہ ایئر لائنز کو اس بات کی تصدیق کرنے کے لیے کہ غیر ملکی مسافروں کو امریکہ جانے والی پروازوں میں سوار ہونے سے پہلے ویکسین لگائی گئی ہے۔ امریکی حکام اور ایئر لائنز کے درمیان ایک تشویش اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ غیر ملکی مسافروں کو ویکسین کے نئے قوانین کے بارے میں آگاہی ہو جو صرف دو ہفتوں میں نافذ العمل ہوں گے اور ساتھ ہی غیر ویکسین والے امریکیوں کو بھی سخت جانچ کے قوانین کا سامنا کرنا پڑے گا۔

      یو ایس سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن (CDC) نے پیر کو رابطے کا پتہ لگانے کے نئے قواعد جاری کیے کے لیے ایئر لائنز کو بین الاقوامی ہوائی مسافروں سے معلومات اکٹھی کرنے کی ضرورت ہوتی ہے جیسے کہ فون نمبر، ای میل اور امریکی پتے اور اسے 30 دنوں تک اپنے پاس رکھنے کی ضرورت پڑنے کی صورت میں ان مسافروں کے ساتھ فالو اپ کرنے کے لیے جو COVID-19 کی مختلف حالتوں یا دیگر پیتھوجینز سے متاثر ہوئے ہوں، سہولت حاصل ہوگی۔

      وائٹ ہاؤس نے تصدیق کی ہے کہ 18 سال سے کم عمر کے بچے ویکسین کی نئی ضروریات سے مستثنیٰ ہیں
      وائٹ ہاؤس نے تصدیق کی ہے کہ 18 سال سے کم عمر کے بچے ویکسین کی نئی ضروریات سے مستثنیٰ ہیں


      سی ڈی سی نے اس ماہ کہا کہ وہ امریکی ریگولیٹرز یا عالمی ادارہ صحت کے ذریعہ استعمال کے لیے مجاز کسی بھی ویکسین کو قبول کرے گا لیکن مخلوط خوراک کی کورونا وائرس ویکسین قبول کریں گے۔ اس فہرست میں اسپوتنک ویکسین کو چھوڑ دیا گیا ہے جسے لاطینی امریکی ممالک نے بڑے پیمانے پر استعمال کیا ہے۔

      ویکسین ضروری:

      میکسیکو میں حکومت نے کہا ہے کہ وہ تقریباً 9 فیصد آبادی کو ٹیکہ لگانے کے لیے اسپوٹنک کی 24 ملین خوراکیں استعمال کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ بائیڈن انتظامیہ کے ایک اہلکار نے پیر کو کہا اور بین الاقوامی ہوائی سفر کی پالیسی جس میں کچھ دوسری بڑی ویکسینز کا جائزہ لیا جائے گا کیونکہ ان ویکسینوں کی کارکردگی کا ڈیٹا ایک ریگولیٹری عمل میں دستیاب ہو جاتا ہے۔

      ٹرانسپورٹیشن سیکیورٹی ایڈمنسٹریشن ایک حفاظتی ہدایت جاری کرنے کا ارادہ رکھتی ہے جو ویکسین کی ضروریات کو نافذ کرنے والی ایئر لائنز کے لیے قانونی بنیاد فراہم کرتی ہے۔ تصدیقی فارم میں بتایا گیا ہے کہ ہوائی مسافروں کے لیے ویکسینیشن کی حیثیت کے بارے میں جھوٹ بولنا جرم ہے۔سی ڈی سی نے کہا کہ COVID-19 کی ضروریات سے بچنے کے خواہاں بین الاقوامی مسافروں کے لیے کوئی مذہبی چھوٹ نہیں ہے۔

      ویکسینیشن دستاویزات:
      غیر ملکی ہوائی مسافروں کو سرکاری طور پر ویکسینیشن دستاویزات فراہم کرنے کی ضرورت ہوگی اور ایئر لائنز کو تصدیق کرنی ہوگی کہ آخری خوراک سفر کی تاریخ سے کم از کم دو ہفتے پہلے تھی۔ بین الاقوامی ہوائی مسافروں کو روانگی سے پہلے تین دن کے اندر منفی COVID-19 ٹیسٹ کا ثبوت فراہم کرنا ہوگا۔ وائٹ ہاؤس نے کہا کہ غیر ویکسین شدہ امریکیوں اور چھوٹ حاصل کرنے والے غیر ملکی شہریوں کو روانگی کے ایک دن کے اندر منفی COVID-19 ٹیسٹ کا ثبوت فراہم کرنے کی ضرورت ہوگی۔

      بائیڈن انتظامیہ اس ہفتے کے آخر میں ویکسین لگوانے والے غیر ملکی شہریوں کے لیے 8 نومبر کو زمینی سرحدی گزرگاہوں پر پابندیاں ہٹانے کے متوازی منصوبوں کی تفصیلات جاری کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: