உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Covid-19 : فرانس میں ملا کورونا کا ایک اور ویریئنٹ 'IHU'، اومیکران سے بھی زیادہ متعدی

    Covid-19 : فرانس میں ملا کورونا کا ایک اور ویریئنٹ 'IHU'، اومیکران سے بھی زیادہ متعدی

    Covid-19 : فرانس میں ملا کورونا کا ایک اور ویریئنٹ 'IHU'، اومیکران سے بھی زیادہ متعدی

    Covid-19 Latest News : کورونا وائرس (Coronavirus) کے اومیکران (Omicron) ویریئنٹ سے پریشان دنیا کیلئے ایک اور بری خبر ہے ۔ فرانس (France) میں سائنسدانوں کو کورونا وائرس کا ایک نیا ویریئنٹ ملا ہے جو اومیکران سے بھی زیادہ متعدی ہے ۔

    • Share this:
      پیرس : کورونا وائرس (Coronavirus) کے اومیکران (Omicron) ویریئنٹ سے پریشان دنیا کیلئے ایک اور بری خبر ہے ۔ فرانس (France) میں سائنسدانوں کو کورونا وائرس کا ایک نیا ویریئنٹ ملا ہے جو اومیکران سے بھی زیادہ متعدی ہے ۔ یہ ویریئنٹ زیادہ میوٹیڈ ہے اور اس کا نام آئی ایچ یو ہے ۔ اس B.1.640.2 ویریئنٹ کو آئی ایچ یو میڈیٹیرینس انفیکشن کے سائنسدانوں نے تلاش کیا ہے ۔ ریسرچ کرنے والوں نے کہا کہ اس ویریئنٹ میں 46 میوٹیشن ہیں ، جو اومیکران سے بھی زیادہ ہے ۔

      سائنسدانوں نے کہا کہ آئی ایچ یو ویریئنٹ ویکسین اور انفیکشن کو لے کر زیادہ مزاحم ہے ۔ یہی نہیں اس آئی ایچ یو ویریئنٹ کے کم سے کم 12 معاملات مارسیل لیس کے پاس درج کئے گئے ہیں ۔ یہاں سے لوگ افریقہ کے کیمرون گئے تھے ۔ یہ نیا ویریئنٹ ایسے وقت پر ملا ہے جب دنیا کے زیادہ تر حصوں میں کورونا کا اومیکران ویریئنٹ پھیلا ہوا ہے ۔ حالانکہ اب آئی ایچ یو ویریئنٹ کے پھیلنے کا خطرہ منڈلا رہا ہے ۔

      B.1.640.2 ویریئنٹ کو کسی دیگر ملک میں ابھی تک نہیں پایا گیا ہے اور ڈبلیو ایچ او نے بھی اس کو جانچ کے دائرے میں ڈالنے کا اعلان نہیں کیا ہے ۔ اس درمیان وائرس ماہرین ایریک فیگل ڈنگ نے کہا کہ نئے ویریئنٹ آرہے ہیں ، لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے وہ زیادہ خطرناک ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ابھی یہ دیکھنا ہوگا کہ یہ نیا ویریئنٹ کسی کٹیگری میں آتا ہے ۔ اس سے پہلے 24 نومبر 2021 کو اومیکران ویریئنٹ کا جنوبی افریقہ میں پتہ چلتا تھا ۔ اب تک یہ 100 ممالک میں پھیل چکا ہے ۔

      اس درمیان دنیا بھر میں کورونا وائرس کے معاملات بڑھ کر 29.2 کروڑ سے زیادہ ہوگئے ہیں ۔ اس وبا سے اب تک کل 54.4  لاکھ سے زیادہ لوگوں کو کی موت ہوئی جب کہ 9.20 ارب سے زیادہ کا ویکسینیشن ہوا ہے ۔ یہ اعداد و شمار جانس ہاپکنگس یونیورسٹی نے شیئر کئے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: