پاکستان میں دہشت گردوں نے اسپتال کو بنایا لانچ پیڈ، سرحد کے پاس نظر آئے 30 دہشت گرد

اسپتالوں میں فدائین دہشت گردوں کو ٹریننگ دینے کا کام کیا جارہا ہے ۔ ان دہشت گردوں کا مقصد صرف ہندستان میں دہشت گردانہ حملوں کو انجام دینا ہے۔

Nov 13, 2019 02:26 PM IST | Updated on: Nov 13, 2019 05:24 PM IST
پاکستان میں دہشت گردوں نے اسپتال کو بنایا لانچ پیڈ، سرحد کے پاس نظر آئے 30 دہشت گرد

علامتی تصویر

لاہور: پاکستان میں دہشت گرد تنظیم مسلسل ہندوستان میں حملے کی فراق میں ہے۔ خفیہ رپورٹ کے مطابق پاکستان کے دہشت گردوں نے اسکول اور مدرسوں کے بعد اب اسپتالوں کو اپنا لانچ پیڈ بنا لیا ہے۔ خبر ہے کہ ان اسپتالوں میں فدائین دہشت گردوں کو ٹریننگ دینے کا کام کیا جارہا ہے ۔ ان دہشت گردوں کا مقصد صرف ہندستان میں دہشت گردانہ حملوں کو انجام دینا ہے۔

خفیہ رپورٹ کے مطابق 2 نومبر کو تقریبا 30 دہشت گرد لاہور کے سب سے بڑے اسپتال گھرکی میں رکے تھے۔ یہ اسپتال ہندستان۔پاکستان بین الاقوامی سرحد سے محض 7 کلومیٹر کی دوری پر موجود ہے۔ ذرائع کے مطابق اسپتال کے ہی ایک بڑے ڈاکٹر عامر عزیز کو ان دہشت گردوں کی دیکھ۔ریکھ کا ذمہ سونپا گیا تھا۔ اسی کے ساتھ دہشت گردوں کی ہر چھوٹی ۔بڑی ضرورتوں  کا دھیان رکھنے بھی ہدایت دی گئی تھی۔

Loading...

خفیہ رپورٹ کے مطابق 4 نومبر کو اسپتال میں موجود دہشت گردوں کے گروپ کو تین الگ۔الگ حصوں میں تقسیم کردیا گیا ہے۔ 12 دہشت گردوں کے پہلے گروپ کی ظفر علی نام کا دہشت گرد قیادت کر رہا ہے۔  خبر ہے کہ اس گروپ کے دہشت گرد پنجاب کے راستے ہندستان میں دراندازی کی کوشش کر سکتے ہیں۔

بتایا جا رہا ہے کہ ان دہشت  گردوں کو فوج کی وردی دی گئی ہے جس سے وہ سرحد کے بیحد قریب تک آسانی سے پہنچ سکیں۔ وہیں 13 دہشت گردوں کا دوسرا گروپ ہے جس کی مولانا عبداللہ مسعود نام کا دہشت گرد سربراہی کررہا ہے۔

Loading...