உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان کی قندھار میں شیعہ مسجد میں جمعے کی نماز کے دوران دھماکہ، درجنوں افراد کی ہلاکت کا اندیشہ

     افغان میڈیا ٹولو نیوز کے مطابق دھماکے میں کئی افراد کے جانی نقصان کا خدشہ ہے۔ یہ ایک شیعہ مسجد ہے  جس میں لوگ جمعہ کی نماز کے لیے جمع ہوئے تھے۔

    افغان میڈیا ٹولو نیوز کے مطابق دھماکے میں کئی افراد کے جانی نقصان کا خدشہ ہے۔ یہ ایک شیعہ مسجد ہے جس میں لوگ جمعہ کی نماز کے لیے جمع ہوئے تھے۔

    افغان میڈیا ٹولو نیوز کے مطابق دھماکے میں کئی افراد کے جانی نقصان کا خدشہ ہے۔ یہ ایک شیعہ مسجد ہے جس میں لوگ جمعہ کی نماز کے لیے جمع ہوئے تھے۔

    • Share this:
      کابل۔ قندھار کی امام بارگاہ مسجد افغانستان میں بم دھماکے (Kandahar's Imam Bargah Mosque) کی خبر ہے۔ افغان میڈیا ٹولو نیوز کے مطابق دھماکے میں کئی افراد کے جانی نقصان کا خدشہ ہے۔ یہ ایک شیعہ مسجد ہے جس میں لوگ جمعہ کی نماز کے لیے جمع ہوئے تھے۔

      اس سے قبل جمعہ کے روز شمالی افغانستان کی ایک شیعہ مسجد میں ہونے والے دھماکے میں 100 سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔ دھماکہ اس وقت ہوا جب سیکڑوں لوگ نماز پڑھ رہے تھے۔ اسلامک اسٹیٹ خراسان (IS-K) نے بم دھماکے کی ذمہ داری لی تھی۔

      قابل ذکر ہے کہ شمالی افغانستان میں شیعہ مسلم نمازیوں سے بھری ایک مسجد میں جمعہ کے روز بم دھماکہ ہوا تھا۔ اس حملے میں کم از کم 100 لوگوں کے جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوئے تھے۔ آئی ایس سے جڑی اماک نیوز ایجنسی نے قندوز صوبہ میں مسجد میں دوپہر کی نماز کے دوران ہوئے دھماکہ کے کچھ گھنٹے بعد اس دعوے کی جانکاری دی۔ واضح رہے کہ اسلامک اسٹیٹ خراسان نے ہی اگست کے آخری ہفتے میں کابل ایئر پورٹ پر حملہ کیا تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: