ہوم » نیوز » عالمی منظر

بوکو حرام نے سات فوجیوں اور 24 عام شہریوں کو ہلاک کر دیا

کانو/نیامی۔ دہشت گرد تنظیم بوکو حرام نے افریقی ملک نائیجر کی فوجی بیرک پر حملہ کر کے سات فوجیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 18, 2016 10:26 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بوکو حرام نے سات فوجیوں اور 24 عام شہریوں کو ہلاک کر دیا
کانو/نیامی۔ دہشت گرد تنظیم بوکو حرام نے افریقی ملک نائیجر کی فوجی بیرک پر حملہ کر کے سات فوجیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

کانو/نیامی۔  دہشت گرد تنظیم بوکو حرام نے افریقی ملک نائیجر کی فوجی بیرک پر حملہ کر کے سات فوجیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔ ایک دوسرے واقعے میں نائیجیریا میں بوکو حرام کے جنگجوؤں نے ایک ہجوم پر فائرنگ کر کے چوبیس افراد کو ہلاک کر دیا۔ یہ ہجوم ریاست آدماوا کے ایک گاؤں میں ایک مقامی لیڈر کے انتقال پر سوگ منانے کے لیے جمع ہوا تھا۔ سرکاری بیان میں نائیجیر میں فوجی بیرک پر حملے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ نائیجر کے جنوب مشرقی علاقے میں ہونے والے حملے میں 12 فوجیوں کی موت ہوئی ہے۔ اس حملے میں 12 دیگر فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں۔ اس علاقے میں مہاجرین کی تعداد زیادہ ہے۔


دوسرے واقعے میں نائیجیریا میں مرنے والوں میں سے زیادہ تر خواتین تھیں۔ پولیس کے ایک ترجمان نے اس حملے کی تصدیق کی ہے تاہم مرنے والوں کی تعداد اٹھارہ بتائی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ حملہ آور موٹر سائیکلوں پر سوار ہو کر آئے تھے۔ نائیجر کے وزیر دفاع نے کہا ہے کہ بوکو حرام کی طاقت کافی بڑھ چکی ہے۔ ہمیں اس بارے میں دوبارہ غور کرنا ہوگا۔ ہمیں اور بھی زیادہ فوجی قوت کی ضرورت پڑے گی کیونکہ ہماری جنگ کسی تنظیم سے نہیں بلکہ فوج سے ہے۔


پڑوسی ملک چاڈ نے نائیجر کو فوجی مدد مہیا کرائی ہے۔ نائیجر نے فرانس سے بھی تعاون مانگا ہے جس نے پہلے ہی دہشت گردی سے جوجھ رہے افریقی ممالک میں تقریبا 3500 فوجیوں کو تعینات کر رکھا ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ سات برسوں سے بوکو حرام شمالی افریقی علاقوں میں ایک اسلامی ریاست کے قیام کی جدوجہد کر رہی ہے۔

First published: Jun 18, 2016 10:26 AM IST