உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    New UK PM:رشی سنک کے خلاف پارٹی میں ماحول بنارہے ہیں بورس جانسن!دیا یہ اہم بیان

    برطانوی وزیراعظم بوریس جانسن

    برطانوی وزیراعظم بوریس جانسن

    New UK PM: بورس جانسن نے ٹوری قیادت کے امیدواروں کو سابق برطانوی وزیر خزانہ سنک کی حمایت نہ کرنے کی درخواست کی ہے۔ جانسن نے کہا ہے کہ وہ قیادت کے کسی امیدوار کی حمایت نہیں کریں گے اور عوامی طور پر انتخابات میں مداخلت نہیں کریں گے۔

    • Share this:
      New UK PM:لندن: جیسے جیسے برطانیہ میں وزیر اعظم کے عہدے کی دوڑ بڑھ رہی ہے، نگران وزیر اعظم بورس جانسن نے رشی سنک کے خلاف حامیوں میں ماحول پیدا کرنا شروع کر دیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق انہوں نے اپنے حامیوں سے کہا ہے کہ وہ کسی کی بھی حمایت کریں لیکن سنک کی نہیں۔

      حکمران کنزرویٹو پارٹی کے رہنما کے طور پر 7 جولائی کو استعفیٰ دینے والے بورس جانسن وزیراعظم کی دوڑ میں پیچھے ہوجانے والے رہنماؤں سے ملاقات کر رہے ہیں تاکہ انہیں سنک کی حمایت نہ کرنے پر راضی کیا جا سکے۔ دی ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق جانسن رشی پر استعفیٰ دینے پر مجبور کرنے اور پارٹی میں ان کے خلاف ماحول بنانے کا الزام لگا رہے ہیں۔ اس سے قبل جانسن اعلان کر چکے ہیں کہ وہ دوڑ میں شامل کسی بھی رہنما کے لیے مہم نہیں چلائیں گے اور نہ ہی اس عمل میں مداخلت کریں گے۔

      سکریٹری آف اسٹیٹ لز ٹرس کے لیے جانسن ماحول بنا رہے ہیں۔ ان کے کٹر حامی جیکب ریس موگ اور نادین ڈوریس ان کے لیے مہم چلا رہے ہیں۔ وہ وزیر تجارت پینی مورڈونٹ کو بھی قبول کرنے کے لیے تیار ہیں۔ اب سابق وزیر اعظم اور ان کا کیمپ 'رشی کے علاوہ کوئی بھی' مہم چلا رہا ہے۔

      رشی پر مہینوں سے منصوبہ بنانے کا لگا ہے الزام
      اخبار نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ وزیر اعظم کی رہائش گاہ میں بہت سے لوگ رشی سے ذاتی دشمنی پر اتر آئے ہیں۔ وہ استعفیٰ دینے کے لئے ساجد واجد کو قصوروار نہیں ٹھہراتے۔ ان کا کہنا ہے، رشی نے استعفیٰ دینے سے پہلے مہینوں تک منصوبہ بندی اور تیاری کی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      UK PM Race:وزارت عظمیٰ کی دوڑ میں رشی سنک کی ایک اور چھلانگ،دورے راونڈمیں بھی رہے اول نمبر

      یہ بھی پڑھیں:
      Sri Lanka Economic Crisis:سونے کی لنکا آج ہے کنگال!جانیے کیوں ہے سری لنکامیں معاشی بحران

      میڈیا رپورٹس کے مطابق بورس جانسن نے ٹوری قیادت کے امیدواروں کو سابق برطانوی وزیر خزانہ سنک کی حمایت نہ کرنے کی درخواست کی ہے۔ جانسن نے کہا ہے کہ وہ قیادت کے کسی امیدوار کی حمایت نہیں کریں گے اور عوامی طور پر انتخابات میں مداخلت نہیں کریں گے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: