உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شمالی افغانستان میں شیعہ مسجد میں نماز کے دوران دھماکہ، درجنوں افراد کے ہلاک ہونے کا اندیشہ

    طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بتایا کہ دھماکہ صوبہ قندوز کے دارالحکومت بندر کے خان آباد قصبے میں ہوا ہے۔ اسی دوران مقامی میڈیا نے درجنوں ہلاکتوں کی اطلاع دی ہے۔

    طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بتایا کہ دھماکہ صوبہ قندوز کے دارالحکومت بندر کے خان آباد قصبے میں ہوا ہے۔ اسی دوران مقامی میڈیا نے درجنوں ہلاکتوں کی اطلاع دی ہے۔

    طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بتایا کہ دھماکہ صوبہ قندوز کے دارالحکومت بندر کے خان آباد قصبے میں ہوا ہے۔ اسی دوران مقامی میڈیا نے درجنوں ہلاکتوں کی اطلاع دی ہے۔

    • Share this:
      کابل۔ شمالی افغانستان (Afghanistan) کی ایک مسجد میں جمعہ کے روز ایک زوردار دھماکے میں متعدد افراد ہلاک ہوگئے۔ عینی شاہدین نے یہ معلومات دی۔ دھماکہ صوبہ قندوز (Northern Afghan city of Kunduz) کی ایک شیعہ مسجد میں جمعہ کی نماز کے دوران ہوا۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ جب وہ نماز پڑھ رہے تھے تو انہوں نے دھماکوں کی آواز سنی۔

      طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بتایا کہ دھماکہ صوبہ قندوز کے دارالحکومت بندر کے خان آباد قصبے میں ہوا ہے۔ اسی دوران مقامی میڈیا نے درجنوں ہلاکتوں کی اطلاع دی ہے۔

      اس حملے کی ابھی تک کسی نے ذمہ داری نہیں Lی ہے۔ آپ کو بتادیں کہ طالبان کے افغانستان پر قبضے کے بعد داعش خراسان (ISIS-K) ملک میں سرگرم ہو گیا ہے۔ طالبان کو نشانہ بناتے ہوئے حملے بڑھا دئے ہیں۔ دولت اسلامیہ کی خراسان شاخ کا افغانستان کے مشرقی صوبے ننگرہار پر غلبہ ہے۔ وہ طالبان کو اپنا دشمن سمجھتا ہے۔ اس نے ماضی میں طالبان پر حملوں کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ اس میں جلال آباد میں طالبان جنگجوؤں کی گاڑی پر حملے بھی شامل تھے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: