ہوم » نیوز » عالمی منظر

کورونا وائرس پازیٹو کو دی جا سکتی ہے 50 ہزار روپئے تک کی اقتصادی مدد

افسروں کا ماننا ہے کہ فی الحال کئی لوگ ایسے ہوتے ہیں جن میں کووڈ۔۱۹ کے علامات (coronavirus symptoms) ہوتے ہیں وہ ٹیسٹ کروانے سے پیچھے ہٹتے ہیں۔ ایسے میں حکومت اقتصادی طور پر لوگوں کی مدد کرنا چاہ رہی ہے جو کورونا پازیٹو پائے جاتے ہیں۔

  • Share this:
کورونا وائرس پازیٹو کو دی جا سکتی ہے 50 ہزار روپئے  تک کی اقتصادی مدد
افسروں کا ماننا ہے کہ فی الحال کئی لوگ ایسے ہوتے ہیں جن میں کووڈ۔۱۹ کے علامات (coronavirus symptoms) ہوتے ہیں وہ ٹیسٹ کروانے سے پیچھے ہٹتے ہیں۔ ایسے میں حکومت اقتصادی طور پر لوگوں کی مدد کرنا چاہ رہی ہے جو کورونا پازیٹو پائے جاتے ہیں۔

برطانیہ (Britain) کی حکومت نے کورونا وائرس ویکسین کی ٹیسٹنگ (coronavirus test) بڑھانے کیلئے انوکھا طریقہ ڈھونڈا ہے۔ برطانیہ میں جو بھی شخص کووڈ پازیٹو (Coronavirus Positive) پایا جائے گا، اس کے 500 پاؤنڈ (50 ہزار روپئے) ملیں گے۔ اس طرح زیادہ سے زیادہ لوگ خود کا سواب ٹیسٹ (Swab Test) کرانے کیلئے تیار ہوں گے اور اسی سے پتہ چلے گا کہ کون پازیٹو ہے جس سے لوگ اپنے آپ کو سیلف آئیسولیٹ کر سکیں۔ ابھی اس پالیسی کیلئے پرپوزل دیا گیا ہے۔ اگر یہ پرپوزل مان لیا جاتا ہے تو ہر ہفتے اس پلان پر 450 پاؤنڈ کا خرچ آئے گا۔


افسروں کا ماننا ہے کہ فی الحال کئی لوگ ایسے ہوتے ہیں جن میں کووڈ۔۱۹ کے علامات (coronavirus symptoms) ہوتے ہیں وہ ٹیسٹ کروانے سے پیچھے ہٹتے ہیں۔ ایسے میں حکومت اقتصادی طور پر لوگوں کی مدد کرنا چاہ رہی ہے جو کورونا پازیٹو پائے جاتے ہیں۔ یہ سجھاؤ محکمہ صحت کے ایک ڈاکیومینٹ میں ہے جو لیک ہو چکا ہے۔ ابھی اس سجھاؤ پر وزرا کے ساتھ تبادلہ خیال کیا جانا ہے۔ ایسا مانا جا رہا ہے کہ جو اقتصادی مدد دی جا رہی ہے وہ نچلے طبقے کے لوگوں کیلئے کافی نہیں ہے کیونکہ وہ خود کو سیلف آئیسولیٹ نہیں کر پا رہے ہیں۔ کووڈ کی روک تھام کیلئے خود کو سیلف آئیسولیٹ کیا جانا ضروری ہے۔


لیک ہوئے ڈاکیومینٹ پر (Treasury Department) نے کہا کہ 500پاؤنڈ دیا جا حکومت کی جانب سے مشکل ہے جبکہ ڈپارٹمنٹ آف ہیلتھ نے لیک ہوئے پپر پر زیادہ تبصرہ نہین کیا، مگر کہا ہے کہ یہ لوگوں کی ذمے داری ہے کہ وہ گھر پر رہیں اور کورونا وبا کے دوران اس مشکل گھڑی میں ساتھ دیں۔ جمعرات کو برطانیہ کے وزیر اعظم بورس جانسن نے بھی کہا تھا کہ ابھی یہ کہنا جلدبازی ہوگی کہ برطانیہ کووڈ کے سبب لگی پابندیاں موسم بہار تک ختم ہو جائیں گی یا نہیں۔

Published by: Sana Naeem
First published: Jan 22, 2021 03:29 PM IST