உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    US Hostage:پاکستانی سائنسداں کی رہائی کی مانگ کرنےوالا UKشہری انکاؤنٹر میں ہلاک

    US Hostage:پاکستانی سائنسداں کی رہائی کی مانگ کرنےوالا UK شہری انکاؤنٹر میں ہلاک (تصویر:AP)

    US Hostage:پاکستانی سائنسداں کی رہائی کی مانگ کرنےوالا UK شہری انکاؤنٹر میں ہلاک (تصویر:AP)

    عافیہ صدیقی پیشہ سے نیورو سائنٹسٹ تھی اور افغانستان میں امریکی فوجیوں کے قتل کی کوشش میں قصوروار قرار دی گئی تھی۔ امریکی میڈیا نے اُسے ’لیڈی القاعدہ‘ قرار دیا تھا۔ صدیقی فی الحال تیکساس فیڈرل جیل میں بند ہے اور 86 سال قید کی سزا کاٹ رہی ہے۔

    • Share this:
      واشنگٹن: امریکہ (America) کے ٹیکساس میں یہودیوں کی ایک عبادت گاہ میں یرغمال (US Hostage) بنائے گئے 4 لوگوں کو چھڑانے کے لئے کئی گھنٹے چلے پولیس آپریشن کے بعد اُنہیں رہا کرالیا گیا ہے۔ اس دوران کسی بھی یرغمال بنے لوگوں کو کوئی زخم نہیں آئے ہیں، وہیں اس دوران سیکورٹی فورس نے مشتبہ کو انکاونٹر میں مار گرایا ہے جس کی شناخت برطانوی شہری ملک فیصل اکرم کے طور پر ہوئی ہے۔ وہ پاکستانی سائنسداں عافیہ صدیقی (Aafia Siddiqui) کی رہائی کی مانگ کررہا تھا۔

      بائیڈن نے دہشت گردانہ واقعہ قرار دیا
      امریکہ کے صدر جوبائیڈن نے اسے دہشت گردانہ واقعہ قرار دیا ہے۔ ایف بی آئی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس بات کے کئی اشارے نیہں ملے ہیں کہ اس واقعہ میں کوئی اور بھی ملوث تھا۔ حالانکہ پولیس عافیہ کے بھائی سے پوچھ تاچھ کرے گی۔ اکرم کو دہشت گردانہ سرگرمیوں کے الزام میں قید عافیہ صدیقی کو رہا کیے جانے کی مانگ کرتے سنا گیا تھا، جس کے القاعدہ دہشت گرد گروپ سے تعلق ہونے کا شک ہے۔

      پاکستانی سائنسداں عافیہ صدیقی سے بات کرنا چاہتا تھا مشتبہ شخص
      عہدیداروں نے بتایا کہ مشتبہ شخص نے یہ بھی کہا تھا کہ وہ سائنسداں صدیقی سے بات کرنا چاہتا ہے۔ ایف بی آئی کے اسپیشل ایجنٹ انچارج میٹ ڈیسارنو نے بتایا کہ لوگوں کو یرغمال بنانے کا مقصد ایسے ایشو پر مرکوز تھا جو سیدھے طو رپر یہودی طبقے سے متعلق نہیں تھے۔ ڈیسارنو نے کہا کہ، یہ واضح نہیں ہے کہ اکرم نے یہودی عبادت گاہ کو ہی آخر کیوں چنا تھا۔

      ٹیکساس کی فیڈرل جیل میں بند ہے عافیہ صدیقی
      عافیہ صدیقی پیشہ سے نیورو سائنٹسٹ تھی اور افغانستان میں امریکی فوجیوں کے قتل کی کوشش میں قصوروار قرار دی گئی تھی۔ امریکی میڈیا نے اُسے ’لیڈی القاعدہ‘ قرار دیا تھا۔ صدیقی فی الحال تیکساس فیڈرل جیل میں بند ہے اور 86 سال قید کی سزا کاٹ رہی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: