ہوم » نیوز » عالمی منظر

غزہ پراسرائیلی بم باری: اقوام متحدہ کی لاچاری منظرعام پر،غزہ میں امدادی کاموں کے لیے اسرائیل سے مانگی اجازت

ان 50,000 فلسطینیوں میں سے بہت سے خاندان ایسے ہیں؛ جن کے گھر بار کو اسرائیلی افواج نے راکٹ حملوں اور بم باری سے تباہ و برباد اور تہس نہس کردیا ہے۔ جنھیں اب سر چھپانے کے لیے کھلے آسمان کے سوا کوئی شلٹر تک دستیاب نہیں ہے۔ اسی لیے اقوام متحدہ سے جنگی جرائم کی تحقیقات کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

  • Share this:
غزہ پراسرائیلی بم باری: اقوام متحدہ کی لاچاری منظرعام پر،غزہ میں امدادی کاموں کے لیے اسرائیل سے مانگی اجازت
اقوام متحدہ نے غزہ میں امدادی کاموں کے لیے اسرائیل سے مانگی اجازت

عالمی ادارہ اقوام متحدہ اسرائیل سے مطالبہ کررہاہے کہ وہ اپنے عملے کو غزہ میں پہنچ کر امداد فراہم کرنے کی اجازت دے کیونکہ اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں 225 سے زائد فلسطینی ہلاک ہوچکے ہیں۔اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ کے مطابق اسرائیلی آباد کاروں کی وجہ سے اب تک 50,000 سے زائد فلسطینی بے گھر ہوچکے ہیں۔ فلسطین کے اصل باشندوں کو ڈرا دھمکا کر ان کی زمینات پر قبضہ جات کیے جارہے ہیں۔ اور وہاں از سر نو یہودی بستیوں کو تشکیل دیا جارہا ہے۔ان 50,000 افراد میں سے بہت سے خاندان ایسے ہیں؛ جن کے گھر بار کو اسرائیلی افواج نے راکٹ حملوں اور بم باری سے تباہ و برباد اور تہس نہس کردیا ہے۔ جنھیں اب سر چھپانے کے لیے کھلے آسمان کے سوا کوئی شلٹر تک دستیاب نہیں ہے۔ اسی لیے اقوام متحدہ اپیل کررہی ہے کہ انھیں امداد پہنچانے کے لیے اجازت دی جائے۔ جب کہ غزہ میں ہر طرف سے اسرائیلی افواج تعینات ہیں۔


  • فلسطینی رہائش گاہوں اور عمارتوں کی تباہی:


غزہ میں اسرائیلی فضائی حملوں سے 58,000 سے زیادہ فلسطینی بے گھر ہوگئے ہیں جنہوں نے غزہ میں تقریبا 450 بنیادی طور پر شہری عمارتوں کو تباہ یا بری طرح نقصان پہنچا ہے۔


حقوق انسانی کے گروپ ایمنسٹی انٹرنیشنل (Amnesty International) کا کہنا ہے کہ رہائشی عمارتوں پر اسرائیل کے ہوائی حملے جنگی جرائم کی صورت میں ہوسکتے ہیں۔

دوسری جانب اقوام متحدہ سلامتی کونسل کے سفارت کاروں اور مسلم ممالک کے وزرائے خارجہ نے اسرائیل اور فلسطین کے درمیان مزاحمت کو روکنے کی کوششوں کے تحت ایمرجنسی میٹنگ بلائی ہے ۔ (AP Photo)
دوسری جانب اقوام متحدہ سلامتی کونسل کے سفارت کاروں اور مسلم ممالک کے وزرائے خارجہ نے اسرائیل اور فلسطین کے درمیان مزاحمت کو روکنے کی کوششوں کے تحت ایمرجنسی میٹنگ بلائی ہے ۔ (AP Photo)


  • .... لیکن منظوری نہیں ملی:


مشرق وسطی میں فلسطینی پناہ گزینوں کے لئے اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی (United Nations Relief and Works Agency for Palestine Refugees in the Near East) نے ایک بیان جاری کیا، جس میں اسرائیل سے فوری طور پر مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ بین الاقوامی قانون کے تحت اپنی ذمہ داریوں کے مطابق غزہ تک اپنے عملے اور انسانی امدادی سامان تک رسائی کی اجازت دیں۔

یو این آر ڈبلیو اے نے کہا کہ ایجنسی کو غزہ تک ضروری انسانی امداد کی فراہمی کے لیے ابھی تک منظوری نہیں ملی۔ جب کہ حاملہ خواتین ، بچوں ، معذور افراد اور بوڑھوں سمیت خاص طور پر کمزور افراد کی مدد کی بہت زیادہ ضرورت ہے۔

اسٹریٹجک مواصلات کی ڈائریکٹر تمارا الفریائی (Strategic Communications Director Tamara Alrifai) نے کہا کہ یو این آر ڈبلیو اے غزہ جانے کے لئے قائم شدہ میکانزم کے ذریعے فوری طور پر منظوری کا منتظر ہے‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 19, 2021 10:55 AM IST