உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Masood Azhar: مسعود اظہر کے بھائی عبدالرؤف اظہر پر پابندی، اقوام متحدہ میں چین کی مداخلت

    یہ کمیٹی سلامتی کونسل کے تمام 15 ارکان پر مشتمل ہے اور اپنا فیصلہ اتفاق رائے سے کرتی ہے۔

    یہ کمیٹی سلامتی کونسل کے تمام 15 ارکان پر مشتمل ہے اور اپنا فیصلہ اتفاق رائے سے کرتی ہے۔

    اقوام متحدہ میں ہندوستان کی مستقل سفیر روچیرا کمبوج (Ruchira Kamboj) نے دنیا کے چند بدنام ترین دہشت گردوں سے متعلق حقیقی اور ثبوت پر مبنی فہرست سازی کی تجاویز پر تکنیکی روک لگانے والے ممالک پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔

    • Share this:
      چین نے دہشت گرد گروپ جیشِ محمد (JeM) کے نائب سربراہ اور مسعود اظہر (Masood Azhar) کے چھوٹے بھائی عبدالرؤف اظہر (Abdul Rauf Azhar) کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی 1267 پابندیوں کی کمیٹی کے تحت فہرست میں شامل کرنے کی تجویز پر تکنیکی روک لگا دی ہے۔

      عبدالرؤف کو کمیٹی میں شامل کرنے کے لیے ہندوستان کی طرف سے ایک تجویز پیش کی گئی تھی اور اس کو شریک کفیل کے طور پر امریکہ کی حمایت حاصل تھی۔ چین کے علاوہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UN Security Council) کے دیگر تمام 14 رکن ممالک کی فہرست سازی کی تجویز کے حامی تھے۔ یہ کمیٹی سلامتی کونسل کے تمام 15 ارکان پر مشتمل ہے اور اپنا فیصلہ اتفاق رائے سے کرتی ہے۔

      ایک سینئر سفارتی ذریعے نے چینی اقدام کو بدقسمتی قرار دیتے ہوئے کہا کہ سیاسی وجوہات کی بنا پر پابندیوں کی کمیٹی کو اپنا کردار ادا کرنے سے روکا گیا ہے۔ جب دہشت گردی کے خلاف عالمی برادری کی مشترکہ جنگ کی بات آتی ہے تو چین کے اقدامات اس کے دوہرے معیار کو بے نقاب کرتے ہیں۔

      اقوام متحدہ میں ہندوستان کی مستقل سفیر روچیرا کمبوج (Ruchira Kamboj) نے دنیا کے چند بدنام ترین دہشت گردوں سے متعلق حقیقی اور ثبوت پر مبنی فہرست سازی کی تجاویز پر تکنیکی روک لگانے والے ممالک پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ پابندیوں کی کمیٹی کے دوہرے معیار اور مسلسل سیاست کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پابندیوں کے نظام کی ساکھ کو ہمیشہ کم ترین درجہ پر پہنچا دیا گیا ہے۔ جس میں چین پیش پیش ہے۔

      یہ بھی پڑھئے:
      گیٹ 2023 نوٹیفکیشن، 30 اگست سے آن لائن رجسٹریشن، 4 فروری سے امتحان

      سلامتی کونسل کو دہشت گردانہ کارروائیوں سے پیدا ہونے والے بین الاقوامی امن اور سلامتی کو لاحق خطرات کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے کمبوج نے کہا کہ پابندیوں کی کمیٹیوں کے موثر کام کے لیے ان سے زیادہ شفاف، جوابدہ اور بامقصد بنانے کی ضرورت ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      MANUU Admission: اردو یونیورسٹی میں فاصلاتی کورسز میں داخلے کیلئے اعلامیہ جاری

      یہ پہلا موقع نہیں ہے جب چین نے 1267 پابندیوں کی کمیٹی میں دہشت گردوں کی فہرست میں رکاوٹ ڈالی ہو۔ جون 2022 میں اس نے لشکر طیبہ (ایل ای ٹی) کے نائب سربراہ عبدالرحمان مکی کو پابندیوں کی فہرست میں شامل کرنے کے لیے ہندوستان اور امریکہ کی مشترکہ تجویز کو روک دیا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: