உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Taiwan vs China:چین-تائیوان کے درمیان تنازعہ کی کیا ہے پوری کہانی؟پیلوسی کے دورے سے کیوں مشتعل ہوا ڈریگن؟ جانیے

    تائیوان  کو لے کر چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی۔ جانیے کیوں ناراض ہے چین۔

    تائیوان کو لے کر چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی۔ جانیے کیوں ناراض ہے چین۔

    Taiwan vs China: چین اور تائیوان کے درمیان کیا تنازعہ ہے؟ تائیوان چین سے کیسے الگ ہوا؟ چین غیر ملکی مداخلت پر ناراض کیوں ہے؟ تائیوان دنیا کے لیے کیوں اہم ہے؟ چین کی ون چائنا پالیسی کیا ہے؟ آئیے جانتے ہیں…

    • Share this:
      Taiwan vs China: چین کے انتباہ کے باوجود امریکی پارلیمنٹ کی اسپیکر نینسی پیلوسی منگل کو تائیوان کے دورے پر پہنچیں۔ پیلوسی کے دورے کے بعد چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی میں اضافہ متوقع ہے۔ پیلوسی کے دورے کے بعد چین نے اسے اشتعال انگیز کارروائی قرار دیا ہے۔ چین نے کہا ہے کہ امریکہ کو اس کے سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔

      دراصل، چین تائیوان کو ون چائنا پالیسی کے تحت اپنے ملک کا حصہ سمجھتا ہے۔ چین اور تائیوان کے درمیان تنازعہ 73 سال سے جاری ہے۔ چین اور تائیوان کے درمیان کیا تنازعہ ہے؟ تائیوان چین سے کیسے الگ ہوا؟ چین غیر ملکی مداخلت پر ناراض کیوں ہے؟ تائیوان دنیا کے لیے کیوں اہم ہے؟ چین کی ون چائنا پالیسی کیا ہے؟ آئیے جانتے ہیں…

      چین-تائیوان کے درمیان تنازعہ کیا ہے؟
      تائیوان جنوب مشرقی چین کے ساحل سے تقریباً 100 میل دور واقع ایک جزیرہ ہے۔ تائیوان خود کو ایک خودمختار ملک سمجھتا ہے۔ اس کا اپنا آئین ہے۔ تائیوان میں عوام کی طرف سے منتخب حکومت ہے۔ اسی وقت، چین کی کمیونسٹ حکومت تائیوان کو اپنے ملک کا حصہ قرار دیتی ہے۔ چین اس جزیرے پر دوبارہ قبضہ کرنا چاہتا ہے۔ چینی صدر شی جن پنگ تائیوان اور چین کے دوبارہ اتحاد کی پرزور حمایت کرتے ہیں۔ تاریخی طور پر دیکھا جائے تو تائیوان کبھی چین کا حصہ تھا۔

      چین سے کیسے الگ ہوا تائیوان؟
      یہ کہانی 1644 میں شروع ہوتی ہے۔ اس وقت چین پر چنگ خاندان کی حکومت تھی۔ تائیوان تب چین کا حصہ تھا۔ 1895 میں چین نے تائیوان کو جاپان کے حوالے کر دیا۔ کہا جاتا ہے کہ یہ تنازع یہیں سے شروع ہوا تھا۔1949 میں چین میں خانہ جنگی کے دوران ماؤزے تنگ کی قیادت میں کمیونسٹوں نے چیانگ کائی شیک کی قیادت میں قوم پرست کامنگ تانگ پارٹی کو شکست دی۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Nancy Pelosi Visit: چین نے فوج کو تیاررہنے کیلئے کہا،20 سکھوئی طیارے تائیوان ایئراسپیس میں

      یہ بھی پڑھیں:
      Crude oil:خام تیل کی قیمتیں دو ہفتوں کی نچلی سطح پر، آج اوپیک کی ہوگی میٹنگ

      امریکی اسپیکر کے دورے سے کیوں بوکھلایا چین؟
      تائیوان کی حفاظت کے لیے امریکہ اسے بلیک ہاک ہیلی کاپٹر سمیت فوجی ساز و سامان فروخت کرتا ہے۔ 2010 میں، اوباما انتظامیہ نے 6.4 بلین ڈالر کے ہتھیاروں کے معاہدے کے تحت تائیوان کو 60 بلیک ہاکس فروخت کرنے کی منظوری دی۔ اس کے جواب میں چین نے امریکہ کے ساتھ کچھ فوجی تعلقات عارضی طور پر منقطع کر لیے۔ امریکہ کے ساتھ تائیوان کا تنازع 1996 سے جاری ہے۔ چین تائیوان کے معاملے میں غیر ملکی مداخلت نہیں چاہتا۔ اس کی کوشش ہے کہ کوئی بھی ملک ایسا کچھ نہ کرے جس سے تائیوان کو ایک الگ شناخت ملے۔ یہی وجہ ہے کہ امریکی پارلیمنٹ کے اسپیکر کے دورے پر چین شدید برہم ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: