உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    China to Relocate Tibetan:چین17ہزار سے زیادہ تبتیوں کو کردے گا بے گھر،طرز زندگی میں بہتری اور ماحولیات کے حفاظت کا دیا حوالہ

    گلیشیئر پگھلنے اور ماحولیات کے عدم تحفظ کا حوالہ دے کر چین نے اٹھایا یہ بڑا قدم۔

    گلیشیئر پگھلنے اور ماحولیات کے عدم تحفظ کا حوالہ دے کر چین نے اٹھایا یہ بڑا قدم۔

    تبت پریس کی رپورٹ کے مطابق دریاؤں کا خشک ہونا، گلیشیئرز کا پگھلنا، سیلاب، گھاس کے میدانوں کو نقصان، یہ سب تبت میں ماحولیاتی تباہی کا سبب ہے اور چینی صدر شی جن پنگ کے سامنے یہ ہو رہا ہے۔

    • Share this:
      China to Relocate Tibetan:ہزاروں فٹ کی بلندی پر رہنے والے 17 ہزار سے زائد تبتیوں کو چین نے بے گھر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان لوگوں کے طرز زندگی میں بہتری اور ماحولیاتی تحفظ کا حوالہ دیتے ہوئے، چین نے ایک آبادکاری کا منصوبہ تیار کیا ہے جس کے تحت تقریباً 17,555 تبتیوں کو جنوب مغربی سرحد پر واقع ناگکو شہر سے دور منتقل کیا جائے گا۔

      خبر رساں ایجنسی ژنہوا کی رپورت کے مطابق، اگلے دیڑھ مہینے میں لوگ سمندری سطح سے 4500 میٹر سے زیادہ اونچائی والے مقامات سے تقریباً 3600 میٹر کے زیادہ اونچائی والے علاقوں میں چلے جائیں گے۔

      چین کے علاقائی جنگلات اور گراس لینڈ ایڈمنسٹریشن کے ڈائریکٹر وو وے ای نے کہا کہ ناگکو شہر میں زندگی بہت پیچیدہ ہے۔ یہاں کی آب و ہوا کافی سخت ہے اور یہاں کی زمین دیگر علاقوں کی نسبت کم زرخیز سمجھی جاتی ہے۔ یہاں کے گھاس کے میدان بھی خراب ہونے لگے ہیں۔

      وو نے کہا، چینی حکومت کا آبادکاری کا منصوبہ عوام پر مبنی ترقی کے خیال کی عکاسی کرتا ہے، جس میں ماحولیاتی تحفظ اور بہتر زندگی کے لیے لوگوں کے مطالبات کو مدنظر رکھا گیا ہے۔ تاہم اطلاعات کے مطابق چینی حکومت کا آبادکاری کا منصوبہ تقریباً آٹھ سال کا ہے جس میں تبت کے تقریباً 100 قصبوں کی 130,000 سے زائد آبادی کو منتقل کیا جائے گا۔

      معلومات کے مطابق یہ اسکیم تبت میں حال ہی میں جاری وائٹ پیپر کے بعد سامنے آئی ہے۔ جب تبت '1951 سے : لبریشن، ڈیولپمنٹ اینڈ پروسپرٹی فرام بیجنگ‘عنوان سے ایک وائٹ پیپر جاری کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ کس طرح تبت کے ماحول کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے اور حکومت کو اس کی کوئی فکر نہیں ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      یوکرائن کی جنگ سے ہندوستان میں ’’Diamond City‘‘ کی چمک پڑی ماند! کیوں؟

      یہ بھی پڑھیں:
      Pride March: ترک پولیس نے استنبول پرائیڈ مارچ پر کیا کریک ڈاؤن، 200 افراد زیرحراست

      تبت پریس کی رپورٹ کے مطابق دریاؤں کا خشک ہونا، گلیشیئرز کا پگھلنا، سیلاب، گھاس کے میدانوں کو نقصان، یہ سب تبت میں ماحولیاتی تباہی کا سبب ہے اور چینی صدر شی جن پنگ کے سامنے یہ ہو رہا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: