உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڑاانکشاف! برٹین کے شاہی محل میں بھی چینی جاسوس، پرنس فلپ کی جانب سے بنائے گئے چیریٹی میں کی دراندازی

    کرسٹن لی چینی جاسوسوں کے اس نیٹ ورک کا حصہ تھی اور چین کو مسلسل معلومات بھیج رہی تھی۔ اسی دوران جب مارٹن پامر سے اس بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا، ’میں نے 1990 کی دہائی کے اوائل سے اے آر سی کے ذریعے ماحولیاتی مسائل پر چین میں تاؤسٹ، بدھسٹ اور عیسائی گروپوں کے ساتھ کام کیا ہے۔‘

    کرسٹن لی چینی جاسوسوں کے اس نیٹ ورک کا حصہ تھی اور چین کو مسلسل معلومات بھیج رہی تھی۔ اسی دوران جب مارٹن پامر سے اس بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا، ’میں نے 1990 کی دہائی کے اوائل سے اے آر سی کے ذریعے ماحولیاتی مسائل پر چین میں تاؤسٹ، بدھسٹ اور عیسائی گروپوں کے ساتھ کام کیا ہے۔‘

    کرسٹن لی چینی جاسوسوں کے اس نیٹ ورک کا حصہ تھی اور چین کو مسلسل معلومات بھیج رہی تھی۔ اسی دوران جب مارٹن پامر سے اس بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا، ’میں نے 1990 کی دہائی کے اوائل سے اے آر سی کے ذریعے ماحولیاتی مسائل پر چین میں تاؤسٹ، بدھسٹ اور عیسائی گروپوں کے ساتھ کام کیا ہے۔‘

    • Share this:
      لندن:چین(China) کے انٹیلی جنس اہلکاروں نے برطانیہ(Britain) کے آنجہانی شہزادہ فلپ(Prince Philip) کی طرف سے قائم کردہ خیراتی ادارے میں دراندازی کی ہے۔ چینی جاسوسوں نے Faithinvest نامی NGO کے ذریعے خیراتی کاموں میں اپنا اثر بنایا۔ چیریٹی کے تعاون سے ایجنٹوں نے ونڈسر کیسل میں ڈیوک آف ایڈنبرا سے ملاقات کی۔ ڈیوک نے بکنگھم پیلس(Buckingham Palace) میں چیریٹی کے شریک بانی مارٹن پامر سے بھی ملاقات کی۔ یہ انکشاف ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب برطانوی خفیہ ایجنسی نے برطانیہ کی پارلیمنٹ میں چینی جاسوس گینگ کی موجودگی کو بے نقاب کیا ہے۔

      دی سن کی رپورٹ کے مطابق، انٹیلی جنس ذرائع نے اب انکشاف کیا ہے کہ جن پر MI5 کی جاسوسی کا الزام ہے وہ بیجنگ ڈیپارٹمنٹ کے لیے کام کرنے والے کمیونسٹ ایجنٹ تھے۔ ان چینی ایجنٹوں نے 2017 میں بکنگھم پیلس کا دورہ بھی کیا تھا۔ انہوں نے ایک اور خیراتی ادارے الائنس آف ریلیجن اینڈ کنزرویشن (ARC) کے ذریعے کئی مواقع پر شہزادہ فلپ سے ملاقات کی۔ اس خیراتی ادارے کی بنیاد بھی مارٹن پامر نے رکھی تھی۔ یہ ایجنٹ چائنا تاؤسٹ ایسوسی ایشن(China Taoist Association) کے ذریعے کام کر رہے تھے۔ یہ تنظیم فیتھ انوسٹ کے ساتھ شامل ہوئی اور اس کے ذریعے چینی جاسوسوں نے آخری مرتبہ 2017 میں ایک وفد محل میں بھیجا تھا۔

      چین کے یونائٹیڈ فرنٹ ورک ڈپارٹمنٹ نے رچی جاسوسی کی سازش!
      پرنس فلپ نے چینی گروپ کے ساتھ تصویر بھی کھنچوائی۔ لیکن ایسی کوئی اطلاع نہیں ہے کہ پرنس فلپ یا پامر کو معلوم تھا کہ وہ چینی ایجنٹ ہیں۔ چینی ایجنٹوں کے اس گروپ کو بیجنگ کے یونائیٹڈ فرنٹ ورک ڈیپارٹمنٹ کے ذریعے کنٹرول کیا جا رہا تھا۔ ایک ذریعہ نے کہا، ’یونائیٹڈ فرنٹ ورک ڈپارٹمنٹ کو ان ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات استوار کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے جن کے ساتھ چین کے اچھے تعلقات نہیں ہیں۔ لیکن یہ محکمہ سفاکانہ انٹیلی جنس اور غیر ملکی مداخلت کی سرگرمیوں میں بھی ملوث ہے۔‘ MI5 نے اس ماہ رپورٹ کیا کہ کرسٹن لی نامی ایک چینی جاسوس برطانوی پارلیمنٹ میں جاسوسی کر رہی تھی۔

      مارٹن پامر نے اس پورے معاملے پر کیا کہا؟
      کرسٹن لی چینی جاسوسوں کے اس نیٹ ورک کا حصہ تھی اور چین کو مسلسل معلومات بھیج رہی تھی۔ اسی دوران جب مارٹن پامر سے اس بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا، ’میں نے 1990 کی دہائی کے اوائل سے اے آر سی کے ذریعے ماحولیاتی مسائل پر چین میں تاؤسٹ، بدھسٹ اور عیسائی گروپوں کے ساتھ کام کیا ہے۔‘ انھوں نے کہا، ’چین کے تمام مذہبی ادارے سرکاری طور پر ایک سرکاری وزارت کے تحت آتے ہیں کیونکہ چینی حکومت جانتی ہے کہ مذاہب سماجی اتحاد اور ہم آہنگی کے لیے کام کرتے ہیں۔ لیکن وہ احتجاج اور عدم اطمینان کا ذریعہ بھی ہو سکتے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: