உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات پہنچا اومیکرون، آئیسولیشن میں سبھی مریض

    دنیا بھر میں Omicron کی دہشت

    دنیا بھر میں Omicron کی دہشت

    رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ متاثر شخص اور اس کے رابطے میں آنے والے تمام افراد کو آئسولیشن میں رکھا گیا ہے۔ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں ا کورونا وائرس (Coronavirus) کے انفیکشن کی ایک نئی شکل ومیکرون (Omicron) کا پہلا کیس سامنے آیا ہے۔

    • Share this:
      سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں ا کورونا وائرس (Coronavirus) کے انفیکشن کی ایک نئی شکل ومیکرون (Omicron) کا پہلا کیس سامنے آیا ہے۔ خلیج فارس کے علاقے میں 'اومیکرون' انفیکشن کا یہ پہلا معلوم کیس ہے۔ سعودی عرب کی سرکاری 'سعودی پریس ایجنسی' نے بتایا کہ ملک میں 'شمالی افریقی ملک' سے آنے والا ایک شخص اومیکرون سے متاثر پایا گیا ہے۔

      رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ متاثر شخص اور اس کے رابطے میں آنے والے تمام افراد کو آئسولیشن میں رکھا گیا ہے۔ اس کے علاوہ متحدہ عرب امارات کی سرکاری 'WAM' سمواد کمیٹی نے کسی ملک کا نام لیے بغیر بتایا کہ متحدہ عرب امارات میں کسی عرب ملک کے ذریعے کسی افریقی ملک سے آئی ایک افریقی خاتون متاثرہ پائی گئی ہے۔ اومیکرون Omicron سے انفیکشن کے کیس 20 سے زیادہ ممالک میں پائے گئے ہیں۔ ابھی اس بات کا مطالعہ کیا جا رہا ہے کہ کورونا وائرس کی یہ شکل کتنی خطرناک ہے۔

      دنیا بھر میں Omicron کی دہشت
      برطانیہ میں Omicron معاملوں کی کل تعداد 11 ہو گئی ہے۔ برطانوی محکمہ صحت کے حکام نے اس کی تصدیق کی ہے۔ ساتھ ہی فرانسیسی وزیر نے ملک میں وبا کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے حوالے سے انتباہ بھی جاری کیا ہے۔ دنیا بھر میں کورونا کے 26 کروڑ سے زائد کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں جبکہ کووڈ سے 52 لاکھ سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ (ایجنسی ان پٹ)

      کورونا وائرس کا نیا ویریئنٹ B.1.1.529 اومیکرون (Omicron) دنیا کے سامنے ایک نیا مسئلہ بن کر کھڑا ہو گیا ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے بھی Omicron پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ کورونا کی یہ شکل اب ہندوستان میں بھی تیزی سے پھیل رہی ہے۔ وہیں وزارت صحت نے معلومات دیتے ہوئے کہا کہ دنیا کا سب سے خطرناک ویریئنٹ تیزی سے پھیل رہا ہے۔
      راجدھانی دہلی میں بھی کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ 'اومیکرون' omicron variant کے 12 مشتبہ مریض پائے گئے ہیں۔ سبھی کو لوک نائک جئے پرکاش نارائن LNJP اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ دو کی کووڈ 19 رپورٹ مثبت آئی ہے جبکہ دیگر کے نتائج کا انتظار کیا جا رہا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ 4 مشتبہ افراد برطانیہ، ایک فرانس اور ایک ہالینڈ سے لوٹے تھے۔

      جمعہ کو دہلی میں 'اومیکرون' مشتبہ افراد کی تعداد بڑھ کر 12 ہو گئی ہے۔ جمعرات تک ایل این جے پی میں 8 مریض داخل تھے۔ تمام مریضوں کے نمونے جینوم سیکوئیسنگ کے لیے بھیجے گئے ہیں۔ راجستھان کے جے پور میں جمعہ کو ایک ہی خاندان کے پانچ افراد کورونا سے متاثر پائے گئے ہیں۔ اہل خانہ نے بتایا کہ ان کے رشتہ دار جنوبی افریقہ سے ہندستان آئے تھے۔ اس وقت ہیلتھ ورکرز نے خاندان کو گھر میں کورنٹائن کر رکھا ہے۔ ساتھ ہی تمام نمونے جینوم سیکوئیسنگ کے لیے بھیجے گئے ہیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: