ہوم » نیوز » عالمی منظر

سعودی عرب کا بڑا فیصلہ ، حرمین شریفین میں صرف 10 رکعات ہوں گی تراویح ، اعتکاف کی اجازت نہیں

الحرمین الشریفین کی جنرل پریذیڈینسی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مسجد الحرام اور مسجد نبوی میں عام عبادت گزاروں کے داخلے پر پابندی برقرار رہے گی۔

  • Share this:
سعودی عرب کا بڑا فیصلہ ، حرمین شریفین میں صرف 10 رکعات ہوں گی تراویح ، اعتکاف کی اجازت نہیں
سعودی عرب کا بڑا فیصلہ ، حرمین شریفین میں صرف 10 رکعات ہوں گی تراویح ، اعتکاف کی اجازت نہیں

سعودی عرب سمیت سبھی خلیجی ممالک میں چاند نظر آنے کے بعد رمضان المبارک کے مقدس مہینہ کا آغاز ہوگیا ۔ تاہم اس مرتبہ حرمین شریفین میں 20 رکعت کی بجائے صرف 10 رکعت نماز تراویح ادا کی جائے گی ۔ علاوہ ازیں سال رواں حرمین شریفین میں اجتماعی افطار کا ابھی بندوبست نہیں کیا جائے گا ۔دونوں مقدس مساجد میں اعتکاف کی اجازت نہیں بھی ہوگی ۔حرمین شریفین میں تراویح کی 10 رکعت ادا کرنے کو شاہ سلمان نے منظوری دیدی ہے ۔


العربیہ ڈاٹ نیٹ کی ایک رپورٹ کے مطابق الحرمین الشریفین کی جنرل پریذیڈینسی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مسجد الحرام اور مسجد نبوی میں عام عبادت گزاروں کے داخلے پر پابندی برقرار رہے گی۔ پریزیڈینسی کے صدر ڈاکٹر شیخ ڈاکٹر عبدالرحمان بن عبدالعزیز السدیس کے حوالے سے رپورٹ میں یہ بھی یہ بتایا گیا ہے کہ حرمین شریفین میں اجتماعی نمازتراویح ادا کی جائے گی ، مگر دونوں مساجد میں اتھارٹی کے ملازمین اور ورکرس ہی نماز تراویح ادا کرسکیں گے ۔ یہ پانچ تسلیمات تک محدود ہوں گی ۔ دو دو رکعت ادا کی جائیں گی ۔  یعنی صرف دس رکعت نمازادا کی جائیں گی ۔


خیال رہے کہ سعودی عرب میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے اقدامات کے تحت مساجد میں پنج وقتہ باجماعت نماز پر پابندی عاید ہے ۔ سعودی عرب کے مفتیِ اعظم نے نماز تراویح اور عیدالفطر کی نماز گھروں میں ادا کرنے کی ہدایت کی ہے۔ علاوہ ازیں سعودی حکومت نے رمضان کے پیش نظر کرفیو کے اوقات پر بھی نظرثانی کی ہے اور اب شہریوں کو صبح نو بجے سے شام پانچ بجے تک ضروری کاموں اور ضروریات زندگی کی خریداری کے لیے گھروں سے باہر جانے کی اجازت ہوگی۔

First published: Apr 23, 2020 11:53 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading