ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بحرین نےہندوستانی اورپاکستانی شہریوں کےداخلےپرلگائی پابندی،دونوں ممالک کوریڈلِسٹ میں کیاشامل

یہ فیصلہ حکومت کی ایگزیکٹو کمیٹی کی ہدایت کے مطابق ہے اور عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) سے لڑنے کے لئے نیشنل میڈیکل ٹاسک فورس (National Medical Taskforce) کی سفارشات پر مبنی ہے۔

  • Share this:
بحرین نےہندوستانی اورپاکستانی شہریوں کےداخلےپرلگائی پابندی،دونوں ممالک کوریڈلِسٹ میں کیاشامل
سفری پابندیوں کے لیے جاری کی ’’کووڈ۔19: ریڈ لسٹ‘‘، دیگر ممالک کے ساتھ ہندوستان اور پاکستان کے مسافروں کے داخلے پر بھی پابندی

بحرین 24 مئی سے اپنی 'ریڈ لسٹ' ممالک کے مسافروں کا داخلے پرپابندی عائد کردی ہے۔ جس میں ہندوستان ، پاکستان ، سری لنکا ، بنگلہ دیش اور نیپال شامل ہیں۔بی ایف سی نے بتایا کہ بحرینی شہریوں اور ریزیڈنسی ویزا رکھنے والوں کو معطلی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ تاہم انہیں جہاز میں سوار ہونے سے پہلے پی سی آر ٹیسٹ فراہم کرنا ہوگا اور بحرین پہنچنے پر 10 دن قرنطینہ میں رہنا ہوگا۔نیوزایجنسی بی ایف سی نے مزید بتایا کہ بحرین دیگر تمام ممالک سے ویکسی نیشن اور غیر ٹیکے لگائے گئے افراد کو اپنے گھروں میں یا قرنطینہ کے لئے لائسنس یافتہ مقامات پر ہی احتیاطی طور پر 10 روزہ قرنطینہ کا اطلاق کرے گا۔


یہ فیصلہ حکومت کی ایگزیکٹو کمیٹی کی ہدایت کے مطابق ہے اور عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) سے لڑنے کے لئے نیشنل میڈیکل ٹاسک فورس (National Medical Taskforce) کی سفارشات پر مبنی ہے۔



بحرینی شہریوں اور ریذیڈنسی ویزا رکھنے والوں کو بورڈنگ سے قبل 48 گھنٹے سے زیادہ عرصہ تکمیل شدہ پی سی آر ٹیسٹ سرٹیفکیٹ (PCR test certificate) پیش کرنا ہوگا اور دسویں دن قیام کے موقع پر ایک اور پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہوگا۔ مزید برآں شہریوں اور ریزیڈنسی ویزا رکھنے والوں کو اپنی رہائش گاہ پر یا نیشنل ہیلتھ ریگولیٹری اتھارٹی کے ذریعہ منظور شدہ لائسنس یافتہ قرنطینہ مراکز پر رکنا ہوگا۔

ریڈ لسٹ کے علاوہ دوسرے ممالک سے آنے والے حفاظتی ٹیکے لگوانے یا بغیر ٹیکے لگائے جانے والے مسافروں کو بورڈنگ سے قبل 48 گھنٹے سے زیادہ عرصہ تکمیل شدہ پی سی آر ٹیسٹ سرٹیفکیٹ بھی پیش کرنا ہوگا اور آمد پر اور قیام کے دسویں روز بھی پی سی آر کا ایک اور ٹیسٹ کرنا ہوگا۔ ان کی رہائش گاہ میں یا لائسنس یافتہ قرنطینہ سہولت پر دس دن کی مدت کے لئے قرنطینہ میں رہنا ہوگا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 24, 2021 02:56 PM IST