உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Covid-19: نیدرلینڈ میں اومیکرون کا بڑھا خطرہ، کرسمس سے پہلے لگا لاک ڈاون

    نیدرلینڈ میں تمام اسکول کم از کم 9 جنوری تک بند رہیں گے۔ کسی کے گھر میں 13 سال سے زیادہ عمر کے 2 سے زیادہ مہمانوں کی اجازت نہیں ہوگی۔(تصویر:AP)

    نیدرلینڈ میں تمام اسکول کم از کم 9 جنوری تک بند رہیں گے۔ کسی کے گھر میں 13 سال سے زیادہ عمر کے 2 سے زیادہ مہمانوں کی اجازت نہیں ہوگی۔(تصویر:AP)

    نیدرلینڈس کے سارے اسکول کم سے کم 9 جنوری تک بند رہیں گے۔ کسی کے گھر میں 13 سال سے زیادہ عمر کے 2 سے زیادہ گیسٹ کو آنے کی اجازت نہیں رہے گی۔ 24 سے 26 دسمبر یعنی کرسمس کے دنوں میں گھر کے اندر کم سے کم چار گیسٹ آسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ اسٹیڈیم میں بنا شائقین کے میچ کھیلے جائیں گے۔

    • Share this:
      ایمسٹرڈم: نیدرلینڈ میں کورونا وائرس (Coronavirus) کے نئے ویرینٹ اومیکرون (Omicron) کے بڑھتے خطرے کو دیکھتے ہوئے کرسمس سے پہلے لاک ڈاون کا اعلان کیا گیا ہے۔ لاک ڈاون کو لے کر سخت گائیڈلائنس جاری کیے گئے ہیں۔ غیر ضروری دکانیں، جم اور عوامی مقامات کو بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ لاک ڈاون کم سے کم جنوری کے دوسرے ہفتے تک لاگو رہے گا۔ بتادیں کہ یوروپ کے کئی ممالک میں اومیکرون کی وجہ سے پابندیاں لگانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

      حکم کے مطابق، نیدرلینڈس کے سارے اسکول کم سے کم 9 جنوری تک بند رہیں گے۔ کسی کے گھر میں 13 سال سے زیادہ عمر کے 2 سے زیادہ گیسٹ کو آنے کی اجازت نہیں رہے گی۔ 24 سے 26 دسمبر یعنی کرسمس کے دنوں میں گھر کے اندر کم سے کم چار گیسٹ آسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ اسٹیڈیم میں بنا شائقین کے میچ کھیلے جائیں گے۔

      کیا ہے ویکسینیشن کا حال؟
      نیدرلینڈ میں اب تک 85فیصد لوگوں کو ویکسین کی دونوں ڈوز لگ چکی ہے۔ اس کے علاوہ 9 فیصد لوگو کو بوسٹر ڈوز بھی دے دی گئی ہے۔ اُدھر فرانس، آئرلینڈ اور جرمنی نے بھی اومیکرون سے بچنے کے لئے کئی پابندیوں کا اعلان کیا ہے۔ فرانس کے وزیراعظم جین کاسٹیکس نے وارننگ دی ہے کہ اومیکرون یوروپ میں بجلی کی رفتار سے پھیل رہا ہے اور ممکنہ اگلے سال کی شروعات تک فرانس میں بھی اثرانداز ہوگا۔

      بچوں کو لگائی جائے گی ویکسین
      نیدرلینڈ کی حکومت نے اسی ہفتے پانچ سال سے 11 سال تک کے بچوں کے لئے کوویڈ19 ویکسین دینے کا راستہ صاف کردیا ہے۔ ملک کی وزارت صحت نے کہا ہے کہ بچوں کا یہ ٹیکہ اندازی پروگرام وسط جنوری میں شروع ہوگا۔ بچوں کو بالغوں کے مقابلے میں فائزر کے ٹیکے کی چھوٹی خوراک ملے گی اور یہ والدین پر منحصر کرتا ہے کہ وہ اپنے بچوں کو ویکسین ڈوز دلواتے ہیں یا نہیں۔ حکومت نے کہا ہے کہ کورونا وائرس سے متاثرہ زیادہ تر بچوں میں صرف ہلکی علامات دکھائی دیتی ہیں، لیکن بہت کم تعدادمیں بچے گمبھیر طور سے بیمار ہوسکتے ہیں۔

      WHO نے کیا کہا؟
      عالمی ادارہ صحت یعنی WHO نے ہفتہ کو بتایا تھا کہ 89 ملکوں میں کورونا وائرس کا نیا ویرینٹ اومیکرون پھیل گیا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے مطابق ہر دیڑھ سے 3 دنوں میں یہ وائرس دوگنی رفتار سے بڑھ رہا ہے۔ دنیا بھر کے ڈاکٹروں کی نظر فی الحال اس ویرینٹ پر ٹکی ہیں۔ فی الحال یہ کہنا مشکل ہے کہ موجودہ ویکسین اس کے خلاف کتنی اثردار ہے۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: