உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Covid-19 : چین میں نئے کیسیز کے بعد ہینان کے دارالحکومت میں لگا لاک ڈاؤن، سانیا شہر میں قریب 80،000سیاح پھنس گئے

    China میں کورونا کے سبب پھر لگایا گیا لاک ڈاون۔ تصویر : سوشل میڈیا ۔

    China میں کورونا کے سبب پھر لگایا گیا لاک ڈاون۔ تصویر : سوشل میڈیا ۔

    Covid-19 : چین کے نیم خودمختار شہر ہانگ کانگ نے پیر کو اعلان کیا تھا کہ وہ غیر ملکیوں کے لیے لازمی ہوٹل قرنطینہ مدت کو ایک ہفتے سے کم کر کے تین دن کر دے گا۔ نئی پالیسی کا اطلاق جمعہ سے ہو گا۔

    • Share this:
      Covid-19 :جنوبی چین کے صوبہ ہینان میں کووڈ-19 کے 259 نئے کیسز سامنے آنے کے بعد وبائی امراض کی وجہ سے لگ بھگ 80,000 سیاح پھنس گئے ہیں۔ دوسری جانب صوبائی دارالحکومت میں اسکولوں کی تعطیلات کے دوران کورونا انفیکشن میں اضافے کے باعث پیر کو رہائشیوں کو 13 گھنٹے تک گھروں سے نکلنے سے روک دیا گیا ہے۔ ہائیکو شہر میں صبح 7 بجے سے شام 8 بجے تک عارضی لاک ڈاؤن ہے اور سنیچر سے سانیا شہر میں غیر معینہ مدت کے لیے لاک ڈاؤن ہے۔

      چینی شہریوں اور سیاحوں کو ساحلی شہر سانیا میں اپنے اپنے ہوٹلوں میں قید کر دیا گیا ہے۔ پیر کو، ہینان کے چار دیگر شہر بھی لاک ڈاؤن کی زد میں تھے۔ نیشنل ہیلتھ کمیشن نے کہا کہ اتوار کو صوبے میں 470 سے زائد نئے کیسز سامنے آئے جن میں سے 245 مریضوں میں انفیکشن کی علامات ظاہر نہیں ہوئیں۔ چین میں ایک ہی دن میں مجموعی طور پر 760 سے زیادہ نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔ سانیا میں تقریباً 80,000 سیاح پھنسے ہوئے ہیں۔ انہیں یہاں سے جانے کے لیے سات دن تک پانچ پی سی آر ٹیسٹوں میں انفیکشن نہ پائے جانے کی رپورٹ دکھانی ہوگی۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Covid-19: کورونا نے پھر بڑھائی تشویش، کیا آنے والی ہے نئی لہر؟ ماہرین نے کہی یہ بات

      یہ بھی پڑھیں:
      جنسی رویے کو درست کریں، گلے ملنا، کسنگ کم ہو،Monkeypox پر WHO کی گائیڈ لائن

      ہانگ کانگ: غیر ملکی مسافروں کے لئے کورنٹین کی مدت ہوئی کم
      چین کے نیم خودمختار شہر ہانگ کانگ نے پیر کو اعلان کیا تھا کہ وہ غیر ملکیوں کے لیے لازمی ہوٹل قرنطینہ مدت کو ایک ہفتے سے کم کر کے تین دن کر دے گا۔ نئی پالیسی کا اطلاق جمعہ سے ہو گا۔ تین دن کے آئسولیشن کے بعد چار دن تک ان کی صحت کی نگرانی کی جائے گی اور اس دوران ان کی نقل و حرکت پر پابندی ہوگی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: