உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان اور چین پر ہندستان کا پہرا، Surveillance Satellite کیلئے 4000 کروڑ روپئے کی تجویز کو ملی منظوری

    پاکستان اور چین کی سرحد (China-Pakistan Border) پر کڑی نظر رکھنے کے لیے ایک سرویلانس سیٹلائٹ (surveillance satellite) کے لیے 4000 کروڑ روپے کی تجویز کو منظوری دی۔ اس سیٹلائٹ satellite سے ہندستانی فوج سرحد پر نظر رکھ سکے گی۔

    پاکستان اور چین کی سرحد (China-Pakistan Border) پر کڑی نظر رکھنے کے لیے ایک سرویلانس سیٹلائٹ (surveillance satellite) کے لیے 4000 کروڑ روپے کی تجویز کو منظوری دی۔ اس سیٹلائٹ satellite سے ہندستانی فوج سرحد پر نظر رکھ سکے گی۔

    پاکستان اور چین کی سرحد (China-Pakistan Border) پر کڑی نظر رکھنے کے لیے ایک سرویلانس سیٹلائٹ (surveillance satellite) کے لیے 4000 کروڑ روپے کی تجویز کو منظوری دی۔ اس سیٹلائٹ satellite سے ہندستانی فوج سرحد پر نظر رکھ سکے گی۔

    • Share this:
      وزارت دفاع (Defence Ministry) نے منگل کو پاکستان اور چین کی سرحد (China-Pakistan Border) پر کڑی نظر رکھنے کے لیے ایک سرویلانس سیٹلائٹ (surveillance satellite) کے لیے 4000 کروڑ روپے کی تجویز کو منظوری دی۔ اس سیٹلائٹ satellite سے ہندستانی فوج سرحد پر نظر رکھ سکے گی۔ ڈفنیس ایکوزیشن کونسل (Defence Acquisition Council) کے اجلاس میں اس تجویز کی منظوری دی گئی۔ سرکاری ذرائع نے خبر رساں ایجنسی اے این آئی کو بتایا، 'ڈفینس ایکوزیشن کونسل کے اجلاس میں ہندوستانی فوج کے لیے ہندوستان میں ایک وقف شدہ سیٹلائٹ کی تجویز کو منظوری دی گئی۔ سیٹلائٹ جی سیٹ 7بی (GSAT 7B) کا منصوبہ انڈین اسپیس ریسرچ آرگنائزیشن (ISRO) کے اشتراک سے کیا جائے گا اور یہ ہندوستانی فوج کی مدد کرے گا۔ فوج نے سرحدی علاقوں میں اپنی نگرانی بڑھا دی ہے۔

      ہندوستانی بحریہ اور فضائیہ کے پاس پہلے سے ہی اپنے مخصوص سیٹلائٹس ہیں اور اس کی منظوری ہندوستانی فوج کو اس صلاحیت کے حصول میں مدد دے گی۔ اپریل-مئی 2020 سے چین کے ساتھ فوجی تعطل کے بعد، ہندوستانی فوج چین کے ساتھ لائن آف ایکچوئل کنٹرول (LAC) کے ساتھ ساتھ ڈرون سمیت اپنے نگرانی کے اثاثوں کو مضبوط بنانے کے ساتھ ساتھ صلاحیتوں کو اپ گریڈ کرنے کی سمت میں کام کر رہی ہے۔ دفاعی حکام نے کہا کہ ISRO کی طرف سے بنایا گیا سیٹلائٹ ملک میں مقامی صنعتوں کو ترقی دینے کے لیے وزیر اعظم نریندر مودی کے شروع کردہ میک ان انڈیا پروگرام میں بھی مدد کرے گا۔

      یہ بھی پڑھیں: مشکل میں عمران حکومت! Pakistan کے پاس بچا ہے صرف 5 دن کا تیل، بینکوں نے بھی دیا بڑا جھٹکا

      380.43 کروڑ روپے کی 14 اشیاء کی خرید کو منظوری
      آپ کو بتا دیں کہ وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ (Defence Minister Rajnath Singh) کی صدارت میں ڈفینس ایکوزیشن کونسل (Defence Acquisition Council) کی میٹنگ ہوئی۔ اس میٹنگ میں ملک کی مسلح افواج کو ترقی دینے کے لیے 8,357 کروڑ روپے کے سرمایہ کے حصول کی تجاویز کو منظوری دی گئی۔ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ 'بائے انڈیا' زمرہ کے تحت تمام تجاویز کو منظوری دے دی گئی ہے۔ ڈیفنس ایکوزیشن کونسل نے آج انوویشنز فار ڈیفنس ایکسیلنس (iDEX) اسٹارٹ اپس/MSMEs سے 380.43 کروڑ روپے کی 14 اشیاء کی خریداری کو منظوری دی۔

      وزارت دفاع نے کہا کہ یہ اشیاء فوج، بحریہ اور فضائیہ خریدیں گی۔ وزارت دفاع نے کہا کہ حصول کونسل نے ڈیفنس ایکسی لینس (iDEX) اسٹارٹ اپس/MSMEs کے لیے ایک نئے آسان طریقہ کار کو بھی منظوری دی ہے۔ یہ اسٹارٹ اپس/ایم ایس ایم ای سے تیزی سے خریداری کرے گا۔ نئے عمل کے مطابق، AON کے ساتھ معاہدے پر دستخط کرنے کے لیے پروکیورمنٹ سائیکل تقریباً 22 ہفتوں کا ہوگا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: