ہوم » نیوز » عالمی منظر

پناہ گزین مسئلہ سے نمٹنے کیلئے یونان میں ایمرجنسی کا مطالبہ

لندن: مقدونیہ کے ایک مقامی گورنر نےمغربی یورپ کے راستے بند ہونے کے سبب آئڈومینی سرحد پر پھنسے ہوئے ہزاروں پناہ گزینوں کی مشکلات کے پیش نظر یونان حکومت سے ایمرجنسی لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 06, 2016 01:13 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پناہ گزین مسئلہ سے نمٹنے کیلئے یونان میں ایمرجنسی کا مطالبہ
لندن: مقدونیہ کے ایک مقامی گورنر نےمغربی یورپ کے راستے بند ہونے کے سبب آئڈومینی سرحد پر پھنسے ہوئے ہزاروں پناہ گزینوں کی مشکلات کے پیش نظر یونان حکومت سے ایمرجنسی لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔

لندن: مقدونیہ کے ایک مقامی گورنر نےمغربی یورپ کے راستے بند ہونے کے سبب آئڈومینی سرحد پر پھنسے ہوئے ہزاروں پناہ گزینوں کی مشکلات کے پیش نظر یونان حکومت سے ایمرجنسی لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔

وسطی مقدونیہ صوبے کے گورنر اپوسٹولوس جتجكوستاس کے مطابق آئڈومینی سرحد پر کم سے کم 13-14 ہزار افراد پھنسے ہوئے ہیں جبکہ 6-7 ہزار لوگ علاقے کے پناہ گزین کیمپ میں رہ رہے ہیں۔ جتجكوتساس نے ہفتہ کو ریڈ کراس اور دیگر غیر سرکاری تنظیموں کی طرف سے ریلیف تقسیم کئے جانے کے دوران آئڈومینی سرحد کا دورہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ ایک بہت بڑا انسانی بحران ہے۔ میں حکومت سے کہنا چاہتا ہوں کہ وہ اس خطے میں ایمرجنسی کا اعلان کرے۔ اسے بہت طویل وقت تک جاری نہیں رکھا جا سکتا ہے۔ قبل ازیں ایک رپورٹ کے مطابق یورپی یونین تارکین وطن کے بحران سے نمٹنے کے لیے انسانی ہمدری کے تعاون کے طور پر کئی کروڑ یورو خرچ کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ یہ منصوبہ یونان میں کثیر تعداد میں پناہ گزینوں کی آمد کے بعد بنایا جا رہا ہے کیونکہ یونان تارکین وطن کے سیلاب سے نمٹنے میں مشکلات سے دوچار ہے۔

اس منصوبہ کے ذریعہ یورپ کے اندر یورپی یونین کے فنڈز کو اسی طرح مختص کیا جائے گا جیسےکسی بحران کے دوران یورپ کے باہر کے لیے کیا جاتا تھا۔ اقوام متحدہ نے یونان کی سرحد کے قریب تارکین وطن کے بڑی تعداد میں جمع ہونے کے نتیجے میں تباہ کن نتائج کے حامل بحران کے بارے میں متنبہ کیا ہے۔ خیال رہے کہ مقدونیہ سے متصل سرحد پر ہزاروں پناہ گزین پھنسے ہوئے ہیں۔

اس منصوبہ کے تحت یورپی یونین کی ایگزیکٹو تنظیم یورپی کمیشن کے ذریعے پیش کیا جائے گا جس کا مطلب یہ ہے کہ یورپی یونین کی امدادی ایجنسیاں پہلی بار اقوام متحدہ کے ساتھ مل کر یورپ کے اندر براہ راست تعاون کریں گی۔ اس سے قبل وہ رکن ممالک کو پیسے مختص کیا کرتی تھی۔

یورپی یونین کے حکام کا کہنا ہے کہ اس منصوبے کہ تحت رواں سال 30 کروڑ یورو مختص کیے جائیں گے تاکہ یورپی یونین میں شامل ممالک تارکین وطن کے بحران سے نمٹ سکیں۔ مجموعی طور پر تین سال کے دوران 70 کروڑ یورو فراہم کیے جائیں گے۔
یونان نے یورپی کمیشن سے تقریباً 50 کروڑ یورو کا مطالبہ کیا ہے تاکہ ایک لاکھ پناہ گزینوں کا خیال رکھا جا سکے۔ سرحد کے بند کیے جانے کے باوجود ہزاروں پناہ گزین شمالی یورپ خصوصاً جرمنی جانے کے لیے بیتاب ہیں اور وہاں قائم کیمپ میں گنجائش سے زیادہ افراد ہیں۔
انٹرنیشنل ریڈ کراس کی ایمرجنسی کوارڈینیٹر کیرولن ہیگا کا کہنا ہے کہ یونان کی فوج نے آئیڈومنی سرحد کے پاس مزید تین کیمپ بنائے ہیں اور ہر ایک میں تقریباً دو ہزار افراد ہیں۔ قبل ازیں اقوام متحدہ کی ایجنسی یو این ایچ سی آر نے متنبہ کیا تھا کہ یورپ اپنے ہی بلائے ہوئے انسانی بحران کے دہانے پر ہے۔‘
ادارے کے ترجمان ایڈرین ایڈوارڈس نے کہا کہ یونان کی سرحد پر بھیڑ کی وجہ سے خوراک، رہائش، پانی اور رفع حاجت کی سہولتوں کی کمی محسوس ہو رہی ہے۔

First published: Mar 06, 2016 01:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading