உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جس باپ کی برسی پر تاناشاہ نے لگائی ہنسنے پر پابندی، اُس باپ کی یہ تھی آخری خواہش

    17 دسمبرسے 27 دسمبر تک نارتھ کوریا میں لوگوں کے ہنسنے پر پابندی۔(تصویر: انٹرنیٹ)

    17 دسمبرسے 27 دسمبر تک نارتھ کوریا میں لوگوں کے ہنسنے پر پابندی۔(تصویر: انٹرنیٹ)

    رپورٹس کے مطابق کم جونگ اِل نے اپنی موت سے پہلے بنائی وصیت میں اپنی دوسری اولادوں کا خیال رکھنے کی بات کہی تھی۔ اُس میں لکھا تھا کہ اگر اُس کی موت ہوجاتی ہے تو اُس کی پچھلی شادیوں سے پیدا بچوں کا دھیان رکھا جائے۔

    • Share this:
      نارتھ کوریا کو دنیا کا سب سے سیکریٹ ملک (Secret Country North Korea) کہا جاتا ہے۔ اس کی خاص وجہ ہے۔ دراصل، اس ملک کی میڈیا سے لے کر انٹرنیٹ پر حکومت کا کنٹرول ہے۔ جب تک حکومت نہ چاہے یہاں کی کوئی خبر باہر نہیں جاتی۔ حکومت بھی جمہوری نہیں ہے۔ تاناشاہ کم جونگ اُن کی مرضی کے خلاف اس ملک میں کچھ نہیں ہوتا۔ اب اس ملک سے نئی خبریہ آرہی ہے کہ یہاں 17 دسمبر سے 27 دسمبر تک سوگ منایا جائے گا۔ یہ سوگ نارتھ کوریا کے سابق تاناشاہ اور کم جونگ اُن (Kim jong Un) کے والد کی دسویں برسی پر منایا جائے گا۔

      خبر ہے کہ کم جونگ اِل کی موت آج سے 10 سال پہلے اسی مہینے میں ہوئی تھی۔ اس وجہ سے اس مہینے سوگ کے 10 دن منائے جائیں گے۔ اس دوران ملک میں کسی کے بھی ہنسنے پر پابندی رہے گی۔ اس کے علاوہ 10 دن تک کوئی جشن نہیں منایا جائے گا۔ کوئی اپنا جنم دن نہیں مناسکتا۔ اتنا ہی نہیں، اگر کسی کی موت ہوجائے ،تو اُس کی آخری رسومات بھی ادا نہیں کی جائے گی۔ کسی کو ان 10 دنوں تک راشن خریدنے کی بھی اجازت نہیں ہے۔

      لیکن اب نارتھ کوریا کے سکریٹس لاے والی SinoNK نے نیا انکشاف کرتے ہوئے بتایا ہے کہ جس والد کی دسویں برسی پر نارتھ کوریا میں اتنی پابندیاں لگائی گئی ہیں، اُس والد کی آخری خواہش ایک ساتھ اس تاناشاہ نے کیا کیا تھا۔ رپورٹس کے مطابق کم جونگ اِل نے اپنی موت سے پہلے بنائی وصیت میں اپنی دوسری اولادوں کا خیال رکھنے کی بات کہی تھی۔ اُس میں لکھا تھا کہ اگر اُس کی موت ہوجاتی ہے تو اُس کی پچھلی شادیوں سے پیدا بچوں کا دھیان رکھا جائے۔

      اصل میں کم جونگ اُن کی جگہ نارتھ کوریا کا اگلا تاناشاہ جونگ نم کو بنناتھا لیکن اُسے چین میں ایک سازش کے تحت پھنسا دیا گیا اور اُس کے بعد اُس کی عزت کو مٹی میں ملا کر اُسے تخت سے ہٹوادیا گیا۔ اس کے بعد 2017 میں اُسے ایک حملے میں مار دیا گیا۔ خفیہ ایجنسیوں کے مطابق، یہ حملہ کم جونگ اُن کے اشارے پر ہوا تھا جس میں اُس نے اپنے سوتیلے بھائی کو زہر دے کر مارڈالا تھا۔ اس طرح کم جونگ اُن نے اپنے والد کی آخری خواہش کا گلہ گھونٹ دیا تھا۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: